-----

افغانستان میں داعش کاٹی وی اسٹیشن پرحملہ، 10افراد ہلاک

Afghanistan Mein Daish Ka Tv Station Per Hamla 10 Afrad Halak

افغانستان کے مشرقی صوبے ننگرہار کے دارالحکومت جلال آباد میں سرکاری ٹی وی اسٹیشن پرداعش کے حملے میں 2پولیس افسروں اور ٹی وی کے 4ملازمین سمیت 10افراد ہلاک اور 18زخمی ہوگئے،2خودکش حملہ آوروں نے خودکو اڑالیا جبکہ 2جوابی کاروائی میں مارے گئے ،داعش نے حملے کی ذمہ داری قبول کرلی، اس سے قبل ہلاک ہونے والوں کی تعداد دو بتائی گئی تھی ۔

بدھ کو افغان میڈیا کے مطابق مشرقی صوبہ ننگرہار کے شہر جلال آباد میں دہشتگردوں نے سرکاری ریڈیو ٹی وی اسٹیشن ’’آر ٹی اے‘‘پر حملہ کردیا، دھماکہ کرنے کے بعد حملہ آوراندر گھس گئے اور فائرنگ کردی ۔

واقعے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے ٹی وی اسٹیشن اور اس سے متصل علاقے کو گھیرے میں لے کر آپریشن شروع کردیا جبکہ امدادی ٹیموں نے زخمیوں کو ایمبیولینس کے ذریعے اسپتال منتقل کیا جہاں انھیں طبی امداد دی جا رہی ہے۔

افغان حکومت کے ترجمان کا کہنا ہے کہ 2خودکش حملہ آوروں سمیت4 دہشت گرد ٹی وی اسٹیشن کی عمارت میں داخل ہوئے اور اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جب کہ سیکیورٹی فورسز سے مقابلے کے دوران 2 دہشت گردوں نے خود کو دھماکے سے اڑالیا۔

وزارت داخلہ کے ترجمان نجیب دانش کا کہنا ہے کہ جوابی کاروائی میں 4حملہ آوروں کو ماردیا گیا۔سرکاری ٹی وی کی عمارت کے قریب گورنر کمپائونڈ اور ایک پولیس اسٹیشن بھی واقع ہے ۔ دوسری جانب حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کرلی ہے۔

ننگرہار میں شدت پسند تنظیم داعش سرگرم ہے اور جلال آباد اس کا دارالحکومت ہے جہاں یہ ٹی وی اسٹیشن واقع ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ ماہ امریکی فوج نے صوبہ ننگر ہار میں ہی سب سے بڑا غیر جوہری بم گرایا تھا جس کے نتیجے میں داعش کے درجنوں کارکن ہلاک ہوئے تھے۔

افغانستان میں موجود امریکی فورسز کا دعوی ہے کہ انتشار اور لڑائی میں ہونے والے جانی نقصان کی وجہ سے داعش کی افغانستان میں موجودگی کم ہورہی ہے اور جنگجوں کی تعداد 3 ہزار سے کم ہوکر صرف 800 تک رہ گئی ہے۔