-----

پاک بھارت ٹاکرا کھیلوں کی تاریخ کا تیسرا سب سے بڑا مقابلہ

Champions Trophy Final

کھیلوں کی دنیا میں فٹبال مقابلوں کے بعد پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ میچ کو دنیا بھر میں سب سے زیادہ دیکھا جاتا ہے اور یہی وجہ ہے آج ہونے والے میچ کو کھیلوں کی تاریخ کا تیسرا سب سے بڑا مقابلہ قرار دیا جارہا ہے۔

کھیلوں کی ویب سائٹ کرک انفو کی رپورٹ کے مطابق پاکستان اور بھارت کے درمیان اوول کرکٹ گراؤنڈ میں ہونے والے میچ کو دنیا بھر میں ایک ارب سے زائد شائقین کرکٹ کی جانب سے دیکھے جانے کا امکان ہے جو کھیلوں کی تاریخ کا تیسرا سب سے بڑا مقابلہ ہے۔
آئی سی سی کے اعداد و شمار کے مطابق پاکستان اور بھارت کے درمیان مقابلے کو دنیا بھر میں شائقین کی بڑی تعداد دیکھتی ہے اور دونوں ٹیموں کے درمیان 2011 میں ہونے والے ورلڈ کپ سیمی فائنل مقابلے کو سب سے زیادہ 495 ملین لوگوں نے دیکھا تھا۔
آئی سی سی کے مطابق چیمپئنز ٹرافی کے گروپ میں پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ کو 324 ملین افراد نے دیکھا جو 2015 کے ورلڈ کپ فائنل سے بھی زیادہ تعداد ہے کیوں کہ 2015 کے ورلڈ کپ فائنل کو 313 ملین افراد نے دیکھا تھا اور اس تعداد میں کمی کی وجہ نیوزی لینڈ اور ایشیا کے اوقات کے فرق کی وجہ ہے۔

پاک بھارت ٹاکرے کو دیکھے جانے کی تعداد کا اندازہ ٹی وی دیکھنے والوں سے لگایا جاتا ہے تاہم اس میں وہ شائقین شامل نہیں جو غیرقانونی ذرائع سے میچ دیکھیں گے۔ غیرقانونی ذرائع میں آن لائن پائریٹ اسٹریمنگ، اسمارٹ فون یا دیگر ذرائع ہوسکتے ہیں جب کہ اس میں وہ لوگ بھی شامل ہیں جو کسی میدان اور ہال میں ایک بڑی ٹی وی اسکرین پر میچ دیکھتے ہیں۔

اسپورٹنگ انٹیلی جنس کے ایڈیٹر نک ہیرس کے مطابق تمام قانونی اور غیرقانونی طریقے سے پاک بھارت میچ دیکھنے والے شائقین کی تعداد کو دیکھا جائے تو چیمپئنز ٹرافی کا فائنل کھیلوں کی تاریخ کا تیسرا سب سے بڑا مقابلہ بن سکتا ہے اور اتوار کے روز صرف خصوصی مقامات پر ہی 400 ملین لوگ یہ میچ دیکھیں گے جو دنیا بھر کے ہر 20 افراد میں سے ایک بنتا ہے۔