Can't connect right now! retry
Advertisement

دلچسپ و عجیب
23 اگست ، 2017

ایشیا کا سب سے صاف ستھرا گاؤں

بشکریہ تصویر ارجن سریش

گاؤں کا نام سنتے ہی سب کے ذہن میں کچے مکانات اور کوڑا کرکٹ کا خیال آتا ہے لیکن بھارت کا ایک گاؤں ایسا بھی ہے جسے ایشیا کا سب سے صاف ستھرا گاؤں کہا جاتا ہے۔

بھارت کے اکثر دیہات گندگی اور بدبو سے بھرپور جب کہ بیشتر گاؤں ٹوائلٹ کی سہولیات سے بھی محروم ہیں لیکن بھارت میں مولیننوگ گاؤں ایسا ہے جو صفائی کی اعلیٰ مثال ہے۔

مولیننوگ گاؤں میں بچہ بڑا ہر کوئی صفائی کا خاص خیال رکھتا ہے اور وہاں کوڑا کرکٹ تو دور بدبو کا بھی تصور نہیں۔ 

بھارتی ڈسکور میگزین کے ایک صحافی نے مولیننوگ گاؤں کو سب سے پہلے 2003 میں ایشیا کا صاف گاؤں قرار دیا۔ 

ان کی دلچسپی اس بات سے اور بڑھ گئی کے یہاں ہر شخص سب سے پہلے گلی، باغ، درخت کی صفائی کو اپنا اولین فریضہ سمجھتا ہے جس سے یہاں کا ماحول دلکش اور صاف ستھرا رہتا ہے۔

مولیننوگ گاؤں کی تعریف سننے کے بعد مقامی سیاحوں کے علاوہ دنیا بھر سے لوگ وہاں آنے لگے اور آج یہ گاؤں اپنی صفائی کی وجہ سے بے حد مقبول ہورہا ہے۔

130 سال قبل مولیننوگ گاؤں میں کولیرا کا مرض پھیل گیا تھا جس کے بعد وہاں کے مکینوں نے صفائی پر زور دیا اور اس مرض سے بچنے کے لئے آہستہ آہستہ  صفائی ستھرائی گاؤں کی روایت بن گئی۔

مولیننگ گاؤں کے لوگ کوڑے کو مخصوص مقام پر لگائے گئے کچرا دانوں میں ڈالتے ہیں اور روزانہ کی بنیاد پر اپنی مدد آپ کے تحت صفائی کے علاوہ گاؤں کو خوبصورت بنانے کے لئے پودے لگانے کا بھی خصوصی اہتمام کرتے ہیں۔ 

روزانہ صبح شام گاؤں کی ہرگلی، باغات، رہائشی مقامات اور سیاحی مقامات کی صفائی کی جاتی ہے۔ اگر سیاح گاؤں میں ذرا سا بھی کچرا پھینک دیتے ہیں تو اس کی فوری طور پر صفا ئی کی جاتی ہے۔

بارش یا آندھی کی وجہ سے گندگی ہو جائے تو اس کے لئے بھی خصوصی طور پر اقدامات کئے گئے ہیں، نکاسی آب کے لئے گزرگاہوں کے قریب نالیاں بنائی گئی ہیں جن کے ذریعے پانی گاؤں سے دور جاتا ہے۔

مولیننوگ گاؤں بھارت کا وہ واحد گاؤں ہے جہاں مختلف مقامات پر بیت الخلاء موجود ہیں۔ 

گاؤں میں سگریٹ نوشی اور پلاسٹک کی تھیلیوں کے استعمال پر سختی سے پاپندی ہے لیکن اگر کوئی سیاح پلاسٹک کی تھیلی کا استعمال کرتا ہے تو اس کو فوراً کوڑا دان میں ڈال دیا جاتا ہے۔


Advertisement