Can't connect right now! retry
Advertisement

دنیا
11 ستمبر ، 2017

طوفان ارما کی تباہی: امریکی صدر نے فلوریڈا میں ایمرجنسی نافذ کردی

فلوریڈا: سمندری طوفان ’’ارما‘‘ امریکی ریاست فلوریڈا سے ٹکرا گیا جس کے نتیجے میں اب تک 4 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق ہوچکی ہے جب کہ امریکی صدر نے ریاست میں ایمرجنسی نافذ کردی۔

سمندری طوفان کے باعث ریاست فلوریڈا میں تیز ہواؤں اور بارشوں کی وجہ سے نظام زندگی مفلوج ہوکر رہ گیا اور 21 لاکھ افراد بجلی سے محروم ہیں جب کہ 60 لاکھ سے زائد افراد کا فلوریڈا سے انخلا ہوچکا ہے۔

صدرڈونلڈ ٹرمپ نے فلوریڈا کو آفت زدہ قرار دیتے ہوئے وفاقی حکومت کی جانب سے ریاست کی مدد کا اعلان کیا ہےجب کہ امریکی میڈیا کے مطابق ’’ارما‘‘ کی شدت میں کمی آئی ہے اور یہ اب کیٹگری2 میں تبدیل ہوگیا ہے ۔

نیشنل ہریکین سینٹر کے مطابق سمندری طوفان ’’ارما‘‘ ٹمپا کے علاقے لیک لینڈ کے نزدیک موجود ہے۔

طوفان کی وجہ سے شدید بارشوں کے علاوہ 110 میل فی گھنٹہ کی تیز ہوائیں بھی چل رہی ہیں جس کے باعث میامی شہر میں ایک تعمیراتی کرین ٹوٹ کر گرگئی۔ سمندری طوفان کی وجہ سے 5 سے 10 فٹ تک لہریں بلند ہورہی ہیں جس کے باعث سیلاب کا خدشہ ہے۔

ریاست فلوریڈا کے ساحلی شہر ٹامپا میں غیر معینہ مدت کےلیے کرفیو نافذ کردیا گیا ہے جب کہ 3 دیگر کاؤنٹیز میں پہلے ہی کرفیو نافذ ہے۔

امریکی میڈیاکاکہنا ہے کہ طوفان فلوریڈا کے مغربی ساحلوں کی جانب بڑھ رہا ہے جب کہ نیشنل ویدر سروس کا کہنا ہے کہ صورت حال انتہائی خطرناک ہوگئی ہے جن لوگوں نے اب تک انخلا نہیں کیا وہ اپنی حفاظت کریں۔

Advertisement