Can't connect right now! retry
Advertisement

پاکستان
22 ستمبر ، 2017

سانحہ ماڈل ٹاؤن: ورثا کا رپورٹ کے حصول کیلئے سول سیکریٹریٹ کے باہر دھرنا

لاہور ہائیکورٹ کی جانب سےسانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ عام کرنے کے بعد ورثا نے رپورٹ کے حصول کے لیے درخواست ایڈیشنل ہوم سیکریٹری پنجاب کو جمع کرادی جب کہ ورثا کی جانب سے سول سیکریٹریٹ کے باہر دھرنا دیا گیا۔

گزشتہ روز لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات سے متعلق جسٹس باقر نجی کمیشن کی رپورٹ کو عام کرنے کا حکم دیا تھا۔

جیونیوز کے مطابق ورثا نے رپورٹ کے حصول کے لیے درخواست ایڈیشنل ہوم سیکریٹری کو جمع کرادی ہے۔

سانحہ ماڈل ٹاؤن میں جاں بحق ہونےوالوں کے ورثا کی بڑی تعداد پنجاب سول سیکریٹریٹ کے سامنے پہنچ گئی اور وہاں دھرنا دے دیا، ورثا میں خواتین، بچوں اور مردوں کی بڑی تعداد موجود تھی جب کہ انہوں نے مطالبہ کیا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن پر ہائیکورٹ کے حکم کےبعد رپورٹ دی جائے۔

نمائندہ جیونیوز کےمطابق سول سیکریٹریٹ میں چیف سیکریٹری اور ہوم سیکریٹری سمیت کوئی موجود نہیں تھا جس کے باعث ورثا نے اپنی درخواست ایڈیشنل ہوم سیکریٹری کے اسٹاف کو دی۔

دھرنے کے شرکا کا کہنا تھا کہ جب تک رپورٹ نہیں دی جائے گی تب تک دھرنا جاری رکھیں گے۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان عوامی تحریک کے رہنما خرم نواز گنڈا پور کا کہنا تھا کہ رپورٹ آنے پر وزیراعلیٰ اور رانا ثنااللہ کا کردار سامنے آئے گا، حکم امتناع جاری نہ ہونے تک کاپی دینے کے پابند ہے، اگر کاپی جاری نہ کی گئی توتوہین عدالت ہوگی۔

بعد ازاں خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ آج سیکریٹری داخلہ سمیت اعلیٰ افسران دفتر نہیں آئے جب کہ ہفتہ اور اتوار کو دھرنا دینے کا کوئی فائدہ نہیں اس لیے فی الحال دھرنا ختم کررہے ہیں۔

واضح رہے کہ جون 2014 میں لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں پیش آنےو الے واقعے میں پاکستان عوامی تحریک کے 14 کارکن جاں بحق ہوئے تھے۔


Advertisement