Can't connect right now! retry

پاکستان
14 مارچ ، 2018

’بنی گالا اور کراچی والوں کے ایک ہی دربار پر جھکنے کی وجہ سامنے آنی چاہیے‘

سابق وزیراعظم نواز شریف آج ایک مرتبہ پھر احتساب عدالت کے روبرو پیش ہوئے—۔جیو نیوز اسکرین گریب

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نوازشریف نے سینیٹ الیکشن پر بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ بنی گالہ والے اور کراچی والے ایک ہی دربار پر جاکر جھکے اس کی کیا خاص وجہ تھی وہ عوام کے سامنے آنی چاہیے۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نواز شریف کے خلاف دائر نیب ریفرنسز کی سماعت کر رہے ہیں۔

احتساب عدالت نے آج 5 گواہوں کو بیان ریکارڈ کرنے کے لیے طلب کیا تھا۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ انوسیٹمنٹ ضمنی ریفرنسز کی سماعت کے دوران استغاثہ کی گواہ نورین شہزادی کا بیان قلمبند کرلیا گیا۔

گواہ نورین شہزادی نے نوازشریف کے اکاؤنٹ کی تفصیلات عدالت میں پیش کیں۔

انہوں نے بتایا کہ نواز شریف کا اکاؤنٹ اگست 2009 میں کھولا گیا، اکاؤنٹ کھولنے کے فارم میں نوازشریف کو چوہدری شوگرملز کا سی ای او لکھا گیا، اکاؤنٹ کھولنے کا مقصد کاروبارسے ہونے والی بچت کورکھنا ہے۔

گواہ کے بیان پر نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے کہا کہ اوپننگ فارم اور کے وائی سی میں اکاؤنٹ ٹائپ میں تضاد ہے، اوپننگ فارم میں اکاؤنٹ ٹائپ کے خانے میں کرنٹ اکاؤنٹ پر مارک کیا گیا ہے۔

گواہ نورین شہزادی نے خواجہ حارث کے اعتراض پر کہا کہ صارفین کے اصرارپرکے وائی سی (فارم) میں سیونگ لکھا جاتا ہے۔

سماعت کے دوران استغاثہ کے دوسرے گواہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر نیب وقار احمد کا بیان قلمبند کرلیا گیا جس کےبعد تیسرے گواہ نجی بہنک ملازم شیرخان کا بیان قلمبند کیا جارہا ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف آج ایک مرتبہ پھر احتساب عدالت کے روبرو پیش ہوئے ہیں، اس سے قبل وہ 20 سے زائد مرتبہ اپنی حاضری یقینی بناچکے ہیں۔

سماعت سے قبل میڈیا سے گفتگو میں سابق وزیراعظم نے سینیٹ الیکشن میں صادق سنجرانی کی فتح کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ 'بنی گالہ والے اور کراچی والے ایک ہی دربار پر جاکر جھکے، اس کی کیا خاص وجہ تھی وہ عوام کے سامنے آنی چاہیے'۔

نیب ریفرنسز کا پس منظر

سپریم کورٹ کے پاناما کیس سے متعلق 28 جولائی 2017 کے فیصلے کی روشنی میں نیب نے شریف خاندان کے خلاف 3 ریفرنسز احتساب عدالت میں دائر کیے، جو ایون فیلڈ پراپرٹیز، العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ انویسمنٹ سے متعلق تھے۔

نیب کی جانب سے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس (لندن فلیٹس) ریفرنس میں سابق وزیراعظم نواز شریف ان کے بچوں حسن اور حسین نواز، بیٹی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کو ملزم ٹھہرایا گیا۔

دوسری جانب العزیزیہ اسٹیل ملز جدہ اور 15 آف شور کمپنیوں سے متعلق فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس میں نواز شریف اور ان کے دونوں بیٹوں حسن اور حسین نواز کو ملزم نامزد کیا گیا ہے۔

نیب کی جانب سے ان تینوں ریفرنسز کے ضمنی ریفرنسز بھی احتساب عدالت میں دائر کیے جاچکے ہیں۔

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM