Can't connect right now! retry

دنیا
14 مارچ ، 2018

ممتاز سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ 76 برس کی عمر میں انتقال کرگئے


لندن: ممتاز برطانوی سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ 76 برس کی عمر میں انتقال کرگئے۔

خاندان کے ترجمان نے اسٹیفن ہاکنگ کے انتقال کی تصدیق کرتے ہوئے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے، اسٹیفن گزشتہ 4 دہائیوں سے زائد عرصے سے پیچیدہ بیماری میں مبتلا تھے اور ویل چیئر پر بیٹھ کر سائنسی میدان میں خدمات انجام دے رہے تھے۔

بلیک ہولز،نظریہ اضافیت پر انقلابی تحقیقاتی مقالے لکھنے پر اسٹیفن ہاکنگ کو آئنسٹائن کے بعد دوسرا سب سے بڑا اور باصلاحیت سائنس دان سمجھا جاتا تھا، ان کا زیادہ تر کام  بلیک ہولز اور تھیوریٹیکل کاسمولوجی کے میدان میں ہے۔

اسٹیفن کی طویل عمر جسمانی معذوری میں گزری جس کی وجہ سے وہ نہ ہی بول سکتے تھے اور نہ ہی چل پھر سکتے تھے لیکن دماغی طور پر مکمل صحت مند تھے۔

اسٹیفن اپنے خیالات دوسروں تک پہنچانے اور اسے منتقل کرنے کے لیے ایک خاص کمپیوٹر کا استعمال کرتے تھے جو ان کی پلکوں کے اشاروں کو الفاظ دے کر بات سمجھانے کا کام کرتا تھا۔

گزشتہ برس برطانیہ کی کیمبرج یونیورسٹی کی جانب سے اسٹیفن ہاکنگ کے 1966ء میں کیے گئے پی ایچ ڈی کا مقالہ جاری کیا گیا جس نے چند ہی روز میں مطالعے کا ریکارڈ توڑا۔

اسٹیفن کے مقالے کو چند روز کے دوران 20 لاکھ سے زائد مرتبہ پڑھا گیا اور 5 لاکھ سے زائد لوگوں نے اسے ڈاؤن لوڈ کیا۔

اسٹیفن ہاکنگ کی کتاب 'بریف ہسٹری آف ٹائم' ایک شہرہ آفاق کتاب ہے جس کی ایک کروڑ سے زائد کاپیاں فروخت ہوئیں۔

اسٹیفن کی ابتدائی زندگی


جنوری 1942 میں پیدا ہونے والے اسٹیفن ہاکنگ نے 1959 میں آکسفورڈ یونیورسٹی کالج میں داخلہ لیا اور تین سال وہاں تعلیم حاصل کی جس کے بعد کیمبرج یونیورسٹی سے نیچرل سائنس میں ڈگری حاصل کی۔

جس زمانے میں اسٹیفن ہاکنگ طبیعات میں گریجوئیشن کر رہے تھے اس وقت فزکس کے ماہرین زمین کے ارتقا سے متعلق مختلف خیالات پیش کر رہے تھے جب کہ 'بگ بینگ' اور 'اسٹیڈی اسٹیٹ' جیسی تھیوریز کو خاصی مقبولیت حاصل تھی جس کے بعد اسٹیفن ہاکنگ نے بھی 1965 میں زمین کے ارتقا پر پر ایک مقالہ لکھا جسے بہت پذیرائی ملی۔

1966 میں اسٹیفن کو ریسرچ فیلوشپ ملی اور انہوں نے اپلائیڈ میتھامیٹکس اور تھیوریٹکل فزکس میں پی ایچ ڈی کی۔

 زمانہ طالبعلمی میں ہی اسٹیفن ہاکنگ نے جولائی 1965 میں جین وائلڈ نامی خاتون سے شادی کی جس سے ان کے 3 بچے ہیں، شادی کے بعد اسٹیفن کو 'موٹر نیورون' نامی مرض کی تشخیص ہوئی اور وہ آہستہ آہستہ اپاہج ہو کر ویل چیئر تک محدود ہوگئے تاہم انہوں نے طبیعات کے شعبے میں کام جاری رکھا۔

اسٹیفن ہاکنگ جس بیماری کا شکار ہوئے وہ آہستہ آہستہ جسم کے ان پٹھوں کو کمزور کرتی ہے جو اعصاب کو کنٹرول کرتے ہیں اور ان کا اس طرح زندہ رہنا کسی معجزے سے کم نہیں۔

اسٹیفن ہاکنگ کی زندگی پر 2014 میں فلم 'دی تھیوری آف ایوریتھنگ' بنائی گئی جس میں مرکزی کردار ایڈی ریڈمیئر نے ادا کیا۔

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM