Can't connect right now! retry

دنیا
17 جولائی ، 2019

امریکی ایوان نمائندگان کی کانگریس ارکان خواتین سے متعلق ٹرمپ کے بیان کی مذمت

فائل فوٹو

واشنگٹن: امریکی ایوان نمائندگان نے ٹرمپ کی جانب سے کانگریس کی خواتین ارکان کو ملک چھوڑنے کا مشورہ دینے اور نسل پرستانہ جملوں کی مذمت کی ہے۔

برطانوی نشریاتی ادرے کے مطابق ایوان نمائندگان نے قرارداد کے ذریعے امریکی صدر کی نسل پرستانہ ٹوئٹس کے بیان کی مذمت کی ہے۔

ایوان نمائندگان میں اس حوالے سے پیش کی گئی قرارداد 240 ووٹوں سے پاس ہوئی جس میں امریکی صدر کے بیان پر ملامت کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا کہ ٹرمپ کے نسل پرستانہ جملوں میں ایک قانونی خوف ہے اور نئے امریکیوں اور مختلف نسل کے لوگوں سے عناد ہے۔

قرارداد میں امریکی صدر کو کانگریس ممبران کو ملک چھوڑنے کا کہنے پر نسل پرستی اور دوسری نسل کے لوگوں سے نفرت کا مرتکب ٹھہرایا گیا ہے۔

ٹرمپ نے قراراد کے وقت ٹوئٹ کی کہ ان کے جسم میں نسل پرستانہ ہڈی نہیں ہے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق قرارداد کی منظوری میں چار ری پبلیکنز اور سابق ری پبلکین قانون ساز جسٹن آمش سمیت ڈیموکریٹس کے تمام 235 ممبران نے حصہ لیا۔

قراداد میں کانگریس ممبران پر نسل پرستانہ جملے کسنے پر امریکی صدر کے بیان کی مذمت کی گئی ہے۔ 

واضح رہےکہ ٹرمپ نے گزشتہ روز اپنی ٹوئٹ میں کانگریس کی چار خواتین ارکان پر کو امریکا چھوڑنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ ان لوگوں کو امریکی سیاست میں گھسنے کی بجائے ان ممالک واپس جانا چاہیے جہاں سے یہ واپس آئے ہیں۔

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM