Can't connect right now! retry

دنیا
14 اکتوبر ، 2020

کوروناکو روکنے کیلئے 10 لاکھ نیولے مارنے کا فیصلہ

فائل فوٹو

ڈنمارک کی حکومت نے کورونا کی روک تھام کیلئے 10 لاکھ نیولے ہلاک کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ڈنمارک کی حکومت نے ملک بھر میں موجود نیولے رکھنے والے فارمز کو 10 لاکھ نیولے ہلاک کرنے کا حکم دیا ہے جو ملک میں کورونا وائرس پر قابو پانے کے تسلسل اور جانوروں میں وائرس کی روک تھام کیلئے کیا جارہا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈنمارک میں کورونا کی موجودہ لہر جون کے آخر سے شروع ہوئی جب شمالی جٹ لینڈ میں نیولے کے فارم میں کام کرنے والے شخص میں وائرس کی تصدیق ہوئی۔

اس حوالے سے امریکن فارن ایگری کلچر کی رپورٹ میں کہا گیا ہےکہ ڈنمارک کی سیفٹی اتھارٹی نے اس فارم سے 34 نیولوں کے سیمپل لیے جس میں نیولوں میں یہ وائرس پھیلتا ہوا پایا گیا۔

ڈنمارک کی حکومت نے رپورٹ کی روشنی میں نیولوں کے فارمز میں وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے موسم سرما کے آغاز میں ہی یہ اقدام اٹھایا تاہم ڈنمارک میں ستمبر میں ہی کورونا کے کیسز میں ڈرامائی طور پر تیزی دیکھنے میں آئی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اکتوبر کے آغاز میں ہی شمالی جٹ لینڈ کے فارمز کے 60 نیولوں میں کورونا کی تصدیق ہوئی جب کہ 46 کو نگرانی میں رکھا گیا ہے۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہےکہ ڈنمارک کے شہر اوٹاہ میں اب تک 10 ہزار سے زائد نیولے کورونا وائرس سے ہلاک ہوچکے ہیں۔

حکومتی فیصلے پر ڈنمارک مِنک ایسوسی ایشن کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ حکومت کا یہ فیصلہ بہت مشکل ہے لیکن ہم اس کی مکمل حمایت کرتے ہیں کیونکہ حالیہ ہفتوں میں ہم سب لوگ یہ بات دیکھ چکے ہیں کہ زیادہ تر شمالی جٹ لینڈ کے فارمز میں کورونا کے کیسز کی تعداد زیادہ ہے اور اس حوالے سے ہمارے پاس کوئی وضاحت نہیں ہے لہٰذا انسانی جان کی اہمیت سب سے پہلے ہے۔

حکومت کا کہنا ہےکہ نیولوں کی ہلاکت پر ان کی افزائش کرنے والوں کو ان کے نقصان کے ازالے کیلئے معاوضہ ادا کیا جائے گا۔

ورلڈ میٹر ویب سائٹ کے مطابق ڈنمارک میں کورونا کیسز کی تعداد 3 ہزار سے زائد ہے جب کہ 650 سے زائد افراد اب تک وائرس سے ہلاک ہوچکے ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM