Can't connect right now! retry

دنیا
18 فروری ، 2021

برطانیہ کورونا وائرس کے 'ہیومن چیلنج ٹرائلز' شروع کرنے والا پہلا ملک بن گیا

برطانیہ کورونا وائرس کے 'ہیومن چیلنج ٹرائلز' شروع کرنے والا پہلا ملک بن گیا۔

برطانوی حکومت کی جانب سے  'ہیومن چیلنج ٹرائلز' شروع کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے جس کے بعد ماہرین کو 18 سے 30 سال کے 90 صحت مند رضاکاروں کی تلاش ہے۔

ٹرائلز کےدوران  90 صحت مند رضاکاروں کو کورونا وائرس کی معمولی مقدار سے دانستہ متاثر کیا جائے گا جس کے بعد وائرس کے خلاف جسم کے مدافعاتی ردعمل اور وائرس کے اپنے مدافعتی نظام کا جائزہ لیا جائے گا۔

 ہیومین چیلنج ٹرائلز میں عام طور پر رضاکاروں کو کسی وائرس سے متاثر کرکے ویکسین کی آزمائش کی جاتی ہے اور پھر کئی ماہ تک ان کی نگرانی کی جاتی ہے۔

کچھ ماہرین کی جانب سے رضاکاروں کو کورونا وائرس سے متاثر کرنے کے حوالے سے اعتراضات کیےگئے ہیں اور اس کے اخلاقی پہلو پر سوال اٹھایا گیا ہے کیونکہ ابھی کورونا کا کوئی حتمی علاج  نہیں ہے۔

دوسری جانب ہیومین چیلنج ٹرائلز کے حامیوں کا کہنا ہے کہ نوجوان اور صحت مند افراد میں کورونا سے زیادہ متاثر ہونے کے خطرات ویسے بھی  کم ہوتے ہیں اور اس طرح کے ٹرائلز کے فوائد معاشرے کے لیے بہت ضروری ہیں جس سے اس کے علاج میں مدد ملے گی۔

خیال رہے کہ  برطانیہ میں کورونا کے وار جاری ہیں اور  گذشتہ روز  بھی کورونا کے 12 ہزار 718 کیسز اور 738 اموات رپورٹ ہوئی ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM