Can't connect right now! retry

دنیا
13 اکتوبر ، 2021

اسرائیل نے مسجد اقصیٰ کے قریب قدیم ترین مسلم قبرستان مسمار کردیا

اسرائیل کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس میں جارحیت کا سلسلہ جاری ہے۔

عرب میڈیا رپورٹس کے مطابق قابض اسرائیلی انتظامیہ نے مسجد اقصیٰ کے قریب الیوسفیہ کے مقام پر قدیم ترین مسلم قبرستان مسمارکردیا۔

اسرائیلی میونسپلٹی انتظامیہ نے بلڈوزر سے قبرستان کی قبریں مسمار کیں۔

عرب میڈیا کے مطابق قبریں مسمار کرنے پر علاقہ مکینوں نے مزاحمت کی جس پر قابض انتظامیہ کو کام روکنا پڑا۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ قبرستان میں 1948 سے 1967 کے درمیان شہید ہونے والے فلسطینی شہدا کی قبریں ہیں۔

واقعہ کے خلاف فلسطینیوں نے شدید احتجاج کیا اور اس دوران اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے 2 فلسطینی زخمی ہوگئے۔

عرب میڈیا کے مطابق قابض اسرائیلی انتظامیہ پارک بنانےکیلئے قبرستان کی زمین پر قبضہ کرنا چاہ رہی ہے جبکہ اسرائیلی انتطامیہ نے2016 میں بھی قدیم ترین باب الرحمہ قبرستان کی قبریں مسمار کی تھیں۔

او آئی سی کی مذمت

دوسری جانب اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) نے بھی مقبوضہ بیت المقدس میں مسلمانوں کا قبرستان مسمار کرنے کی شدید مذمت کی ہے۔

او آئی سی کے بیان کے مطابق قبرستان مسمارکرنا، مقدس مقامات، اسلامی شناخت اور ثقافتی ورثے پر قبضہ اسرائیلی پالیسی ہے، اسرائیل کے ایسے اقدامات مسلمانوں خصوصاً فلسطینیوں کو اشتعال دلانے کا سبب بنتے ہیں۔

اوآئی سی کا کہنا ہے کہ مسلمانوں کے تاریخی قبرستان کی جگہ پارک اور میوزیم کی تعمیر کی شدید مذمت کرتے ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM