کاروبار
31 دسمبر ، 2021

سابق گورنر اسٹیٹ بینک کا مرکزی بینک کی خود مختاری کے بل پر تحفظات کا اظہار

سابق گورنر اسٹیٹ بینک اور وزیراعظم عمران خان کے سابق مشیر ڈاکٹر عشرت حسین نے مرکزی بینک کی خود مختاری کے بل پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

جیو نیوز کے پروگرام آج شاہزیب خانزادہ کے ساتھ میں گفتگو کرتے ہوئے عشرت حسین کا کہنا تھا کہ مانیٹری اور فسکل کوآرڈینیشن بورڈ کو ختم نہیں کرنا چاہیے تھا، اشد ضرورت ہے کہ ملک کی دونوں پالیسیاں کوآرڈینیشن سے ایک ہی سمت میں چلیں، پالیسیاں الگ الگ سمت میں نہیں چلنی چاہئیں۔

سابق گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ حکومت کو کمرشل بینکوں سے مسلسل اتنا قرضہ نہیں لینا چاہیے اور آئی ایم ایف کو سمجھانا چاہیے تھا کہ قیمتوں میں استحکام کو معاشی ترقی پر اتنی زیادہ ترجیح دینا زیادتی ہو گی۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز حکومت نے اسٹیٹ بینک کی خود مختاری کا بل قومی اسمبلی میں پیش کیا تھا جس کے تحت وفاقی حکومت مرکزی بینک سے قرضہ حاصل نہیں کر سکے گی۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM