پاکستان
14 جنوری ، 2022

نیب ترمیمی آرڈیننس کے تحت جعلی اکاؤنٹس اسکینڈل کے ملزمان کو ریلیف ملنا شروع

قومی احتساب بیورو (نیب) ترمیمی آرڈیننس کے تحت جعلی اکاؤنٹس اسکینڈل کے ملزمان کو ریلیف ملنا شروع ہوگیا۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے جعلی بینک اکاؤنٹس باغ ابن قاسم کیس میں دو سال سے قید سابق ڈی جی پارکس کراچی لیاقت قائمخانی کی 10 لاکھ روپے کے مچلکوں پر ضمانت منظور کر لی۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے لیاقت قائم خانی کی ضمانت منظور کرنے کا تحریری فیصلہ جاری کیا۔ عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ لیاقت قائمخانی کا پاسپورٹ ضبط اور نام ای سی ایل میں شامل کیا جائے۔

فیصلے کے مطابق لیاقت قائمخانی کے شریک ملزمان ٹرائل بروقت مکمل نہ ہونے پر ضمانت لے چکے ہیں، ٹرائل مکمل نہ ہونے کی کئی وجوہات ہیں جن کے ذمہ دار لیاقت قائمخانی نہیں لہٰذا نیب ترمیمی آرڈیننس کے تحت درخواست ضمانت منظور کی جاتی ہے۔ 

خیال رہے کہ آصف زرداری کی ضمانت بھی ترمیمی آرڈیننس کے تحت پہلے ہی کنفرم ہو چکی ہے۔

سابق ڈی جی پارکس کے ایم سی لیاقت قائم خانی پر آمدن سے زائد اثاثوں اور خورد برد سمیت دیگر الزامات ہیں، نیب حکام کے مطابق لیاقت قائم خانی کے گھر پر چھاپے کے دوران کروڑوں روپے مالیت کے زیورات، گاڑیاں اور دیگر اشیا بر آمد ہوئی تھیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM