پاکستان
03 جولائی ، 2022

بشریٰ بی بی کی مبینہ آڈیو لیک پر فیاض چوہان کا ردعمل سامنے آگیا

مبینہ آڈیو میں سنا جا سکتا ہے کہ بشریٰ بی بی نے ہی غداری کا بیانیہ بنانے کی ہدایت کی— فوٹو: فائل
مبینہ آڈیو میں سنا جا سکتا ہے کہ بشریٰ بی بی نے ہی غداری کا بیانیہ بنانے کی ہدایت کی— فوٹو: فائل

سابق خاتون اوّل بشریٰ بی بی کی آڈیو لیک پر  تحریک انصاف کے رہنما فیاض الحسن چوہان کا ردعمل سامنے آگیا ہے۔

اپنے ردعمل میں فیاض چوہان نے کہا کہ  پریڈ گراؤنڈ کا کامیاب جلسہ آڈیو لیک کرنے والوں کے منہ پرطمانچہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ دو  پرائیویٹ افراد کی آڈیو لیک کرنا غیراخلاقی، غیرقانونی اور غیرانسانی ہے، آڈیو ویڈیو لیکس والی سیاست عمران خان کے مشن کا راستہ نہیں روک سکتی۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی اور چیئرمین پی ٹی آئی کے فوکل پرسن برائے ڈیجیٹل میڈیا ارسلان خالد کے درمیان گفتگو کی مبینہ آڈیو سامنے آئی تھی۔

اس مبینہ آڈیو میں سنا جا سکتا ہے کہ بشریٰ بی بی نے ہی غداری کا بیانیہ بنانے کی ہدایت کی۔ بشریٰ بی بی نے یہ بھی ہدایت کی کہ فرح گوگی کیس غداری کے بیانیے میں گڈمڈ کر دیا جائے۔

مبینہ آڈیو میں بشریٰ بی بی ، ارسلان خالد کو ہدایات جاری کرتی سنی جا سکتی ہیں۔ انہوں نے یہ بھی ہدایت کی کہ جو لوگ پی ٹی آئی چھوڑ رہے ہیں ان کے خلاف کیسی مہم چلائی جائے۔ بشریٰ بی بی نے ہدایت کی کہ پی ٹی آئی چھوڑنے والوں کو غدار کہا جائے۔

بشریٰ بی بی نے کہا کہ فرح کے خلاف بھی بہت گند ڈالا جائے گا، فرح کے خلاف باتوں پر بھی غداری کے ٹرینڈ چلانے ہیں ۔

اس سے قبل پی ٹی آئی رہنما کہتے رہے ہیں کہ بشریٰ بی بی کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں جب کہ ذرائع بتاتے تھے کہ عثمان بزدار اور وزیر اعظم آزاد کشمیر عبدالقیوم نیازی کے انتخاب کے پیچھے بھی بشریٰ بی بی کا ہاتھ تھا۔

جہانگیر ترین اور ذلفی بخاری کو ہٹانے کے پیچھے بھی بشریٰ بی بی کا ہاتھ بتایا جاتا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM