بارسلونا میں آگ لگنے کے واقعات کی روک تھام کے لیے بھیڑ بکریوں کی خدمات حاصل

اس پائلٹ پراجیکٹ کا آغاز اپریل میں ہوا تھا / اے ایف پی فوٹو
اس پائلٹ پراجیکٹ کا آغاز اپریل میں ہوا تھا / اے ایف پی فوٹو

اسپین کے شہر بارسلونا میں آتشزدگی کی روک تھام کے لیے ایک نئی اور منفرد ٹیم کی خدمات حاصل کی گئی ہے۔

یہ ٹیم بکریوں اور بھیڑوں پر مشتمل ہے جن کا بس ایک ہی کام ہے زیادہ سے زیادہ سبزہ چرنا۔

یہ ایک قدیم حکمت عملی ہے جس کو دنیا کے مختلف حصوں میں آتشزدگی کی روک تھام کے لیے استعمال کیا جارہا ہے۔

اس کا خیال سادہ ہے اور وہ یہ ہے کہ جن علاقوں میں آگ لگنے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے وہاں سبزہ چرنے والے مویشیوں کو چھوڑ دیا جائے جو ایسی خشک نباتات کھالیں جو آگ کے لیے ایندھن کا باعث بن سکتی ہیں۔

اب یہ کام ایک چرواہے کی نگرانی میں ہو یا یہ جانور جنگلی ہوں، مگر اس پر عمل کرنے سے آگ پھیلنے کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔

یہ ہے وہ منفرد ٹیم / فوٹو بشکریہ Ajuntament de Barcelona
یہ ہے وہ منفرد ٹیم / فوٹو بشکریہ Ajuntament de Barcelona

ایک ادارے Pau Costa Foundation کی جانب سے اس طریقہ کار پر 2016 سے اسپین میں کام کیا جارہا ہے اور اس کے عہدیدار Guillem Canaleta نے بتایا کہ ماضی میں اس طرح جنگلات کو آتشزدگی سے بچایا جاتا تھا، ہم نے کچھ نیا نہیں کیا۔

بارسلونا میں اس پروگرام کا آغاز اپریل میں Collserola پارک سے ہوا تھا جو 20 ہزار ایکڑ رقبے پر پھیلا ہوا ہے اور وہاں ہر سال آگ لگنے کے اوسطاً 50 واقعات سامنے آتے ہیں۔

عام طور پر یہ آگ زیادہ نہیں پھیلتی مگر یہ خطرہ موجود ہے کہ کسی دن بڑے پیمانے پر آتشزدگی سے ملحقہ آبادیاں متاثر ہوسکتی ہیں۔

اس پائلٹ پراجیکٹ کا اختتام جولائی میں ہوا مگر اب اسے بارسلونا کے دیگر حصوں میں بھی جلد شروع کیا جائے گا۔

بارسلونا پہلا شہر نہیں جہاں بھیڑ بکریوں کو آتشزدگی کی روک تھام کے لیے استعمال کیا جارہا ہے۔

اس سے قبل امریکی ریاست کیلیفورنیا میں متعدد کمپنیوں نے بکریوں کی خدمات اسی مقصد کے لیے حاصل کیں۔

شمالی پرتگال میں گھوڑوں کے ذریعے Faia Brava reserve کو بچایا گیا جبکہ کینیڈا کے صوبے برٹش کولمبیا میں بھی مویشیوں کو آتشزدگی کا خطرہ کم کرنے کے لیے استعمال کیا جارہا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM