دنیا
10 مارچ ، 2019

ابھی نندن کی تصاویر انتخابی مہم میں استعمال کرنے پر بی جے پی پر شدید تنقید

تصاویر وائرل ہونے پر وزارت دفاع کا الیکشن کمیشن سے رابطہ، سیاسی جماعتوں کو فورسز کے اہلکاروں کی تصاویر استعمال کرنے سے روکنے کی اپیل۔ فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

نئی دہلی: بھارتی حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی) نے پائلٹ ابھی نندن ورتھامن کی تصاویر کو اپنی انتخابی مہم میں استعمال کرنا شروع کردیا جس پر سوشل میڈیا صارفین نے شدید تنقید کی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق دہلی کے علاقے مہرالی کی سڑک پر بی جے پی کے انتخابی پوسٹر پر پائلٹ ابھی نندن کی تصاویر لگانے پر سوشل میڈیا صارفین نے تنقید کرتے ہوئے اسے شیئر کرنا شروع کردیا۔

بھارتی وزارت دفاع نے پائلٹ کی تصاویر لگانے پر اعتراض کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سے درخواست کی کہ سیاسی جماعتوں کو اپنی انتخابی مہم میں اہلکاروں کی تصاویر استعمال کرنے سے روکا جائے۔

یاد رہے کہ پاکستان نے یکم مارچ کو بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو جذبہ خیرسگالی کے تحت واہگہ کے راستے بھارت کے حوالے کیا تھا، جسے 27 فروری کو بھارت کے ایکشن کا جواب دیتے ہوئے آزاد کشمیر سے پکڑا تھا۔

بھارتی صحافی راما لکشمی نے بے جے پی کے انتخابی پوسٹر کو شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ کیا بی جے پی نے انتخابی پوسٹر پر ابھی نندن کی تصویر لگانے کی اجازت دی ہے؟ یہ دہلی ہے نہ کہ بھارت کا کوئی دور دراز کا علاقہ۔














فرضی نام سے ٹوئٹر پو موجود صارف نے لکھا،ابھی نندن کی تصویر انتخابی مہم میں استعمال کرنے پر بی جے پی کو شرم آنی چاہیے، صارف نے وزیراعظم نریندر مودی کا نام لکھے بغیر کہا کہ 'چوکیدار کو بھی شرم آنی چاہیے'۔ 


خوسور توانزاد نامی ٹوئٹر صارف نے لکھا کہ 'آپ اپنے سیاسی پروپیگنڈے کے لیے مسلح افواج افسر کو استعمال نہیں کرسکتے، کیا بی جے پی کچھ ہٹ کر کر رہی ہے'۔

دوسری جانب بھارتی الیکشن کمیشن نے وزارت دفاع کے مطالبے کے بعد سیاسی جماعتوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ مسلح افواج کے کسی بھی شخص کی تصاویر اپنی انتخابی مہم میں استعمال نہ کریں۔ 

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM