Can't connect right now! retry

عید کے دستر خوان کی شان، شامی کباب

— فوٹو: فائل 

کبابوں میں سب سے زیادہ مقبول شامی کباب ہیں، ان کا استعمال چاول، دال اور سبزی کے ساتھ کرنا ہو تو کرلیں ورنہ چاہیں تو سینڈوچ بنا لیں یا چائے کے ساتھ بغیر لوازمات کے یونہی کھالیں۔

جتنے طریقے شامی کباب بنانے کے ہیں، اتنے ہی اس کی تاریخ سے جڑی روایتیں ہیں۔

لیکن ایک بات پر سب کا اتفاق ہے کہ مغل بادشاہوں اور نوابوں کے دستر خوان سے اس کی ابتدا ہوئی۔کہا جاتا ہے کہ لکھنو کے نواب کے تمام دانت گر گئے تو دانتوں کے بغیر ان کے لیے کچھ کھانا پینا مشکل ہو چکا تھا۔

منجھے ہوئے باورچی نے گوشت اور دال کی آمیزش سے نرم نرم کباب تیار کیے۔ ذائقے کے لیے اس میں باریک کتری ہوئے پیاز، پودینہ اور ہری مرچیں ڈالیں۔ کچھ کہتے ہیں کہ باورچی کا تعلق ملک شام سے تھا، اس لیے کبابوں کا نام بھی شامی کباب ہوگیا۔ 

اکثریت کا ماننا ہے کہ یہ کباب خصوصاً شام کے وقت کھانے کے لیے تیار کیے گئے تھے اس لیے انھیں شامی کباب کہا جاتا ہے۔ 

وجہ جو بھی ٹھہرے شامی کباب کے ذائقے اور پسندیدگی سے کوئی انکار نہیں کر سکتا۔ آپ کے پاس اپنی یا خاندانی ترکیب ضرور ہوگی لیکن ایک ترکیب یہ بھی آزما کر دیکھ لیں۔

اجزائے ترکیبی:

بچھیا/بکرے کا ہاتھ سے بنا قیمہ                  ایک کلو  

چنے کی دال                                                   ایک کپ 

پیاز                                                                 درمیانی سائز کا باریک کٹا ہوا

ادرک                                                              پسا ہوا ایک چمچ 

لہسن                                                             پسا ہوا ایک چمچ

نمک                                                              ایک کھانے کا چمچ/ حسب ذائقہ 

لال مرچیں                                                    پسی ہوئی ڈیڑھ کھانے کا چمچ 

ہری مرچیں                                                  3 درمیانی سائز کی  باریک کتری ہوئی 

دھنیا                                                            ایک گڈی 

گرم مصالحہ                                                ایک چمچ 

زیرہ                                                              ایک چمچ 

لیموں                                                          رس ایک کھانے کا چمچ

انڈہ                                                            ایک ، ہلکا پھینٹا ہوا

گندم کا آٹا                                                2 کھانے کے چمچ 

شامی کباب میں بھرنے کے لیے:

ایک پیاز                                                    باریک کترا ہوا 

لیموں                                                       ایک ، رس نکلا ہوا

ہری مرچ                                                  ایک، باریک کتری ہوئی 

پودینہ                                                      مٹھی بھر پتے 

چینی                                                         ایک چوتھائی کھانے کا چمچ

نمک                                                          ایک چوتھائی کھانے کا چمچ

ترکیب:

پیاز، لہسن ، ادرک اور دو چمچ پانی کا پیسٹ بنا لیں۔

ایک بڑی دیگچی میں گھی گرم کریں اور اس میں یہی پیاز کا آمیزہ ڈال کر 10 منٹ کے لیے بھون لیں۔اب اس میں قیمہ اور چنے کی دال ڈال کر اوپر سے اتنا پانی ڈال دیں کہ قیمہ اور دال بھیگ جائیں۔

نمک ڈال کر دیگچی کو ڈھکن سے ڈھانپ دیں، 20 منٹ کے لیے پکنے دیں۔ ڈھکن ہٹا کر مزید 5 سے 10 منٹ کے لیے پکنے دیں یا پھر پانی کو خشک ہونے دیں۔

آمیزے کو بڑی پلیٹ یا تسلے میں میں نکال کر ٹھنڈا کر لیں۔

ٹھنڈا ہو جانے پر اس میں ہری مرچیں، دھنیہ، گرم مصالحہ، لال مرچیں، زیرہ، نمک اور لیموں کا رس ڈال کر بلینڈر میں ڈال کر بلینڈ کرلیں۔ اب اس میں انڈہ شامل کر لیں۔

پیالے میں نکال کر اس میں آٹا ڈال کر اچھی طرح گوندھ لیں۔ ایک علیحدہ پیالے میں کباب میں بھرنے والے تمام اجزا مکس کر لیں۔

گیلے ہاتھوں سے کباب کا گولہ بنالیں، گولے کو دو حصوں میں تقسیم کرکے اس میں بھرائی کرنے والے اجزا ایک چوتھائی چمچ اس کے درمیان میں رکھ دیں اور گولے کو کباب کی شکل دی لیں۔

کبابوں کو ٹرے میں ایک دوسرے کے اوپر رکھے بغیر رکھتے جائیں اور ٹرے کو ایک گھنٹے کے لیے فریج میں رکھ دیں۔

فریج سے نکل کر فرائی پین میں ڈال کر ڈیپ فرائی کرلیں۔

حسب ضرورت چٹنی، سلاد اور تلے ہوئے آلووں کے ساتھ پیش کر دیں جو بھی کھائے گا ترکیب پوچھے بغیر نہیں رہ پائے گا۔ کوئی پوچھے تو اس سے جیو ویب کا یہ لنک شیئر کردیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM