Can't connect right now! retry

کھیل
13 مارچ ، 2020

پی ایس ایل میں شامل غیر ملکی کھلاڑیوں کو واپس جانے کی پیشکش

تمام کھلاڑیوں کو اپنی مرضی سے لیگ چھوڑنے کی اجازت دے دی ہے کیونکہ کھلاڑیوں کا اعتماد اور یقین پی سی بی کے لیے سب سے اہم ہے: چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے کورونا وائرس کے پیش نظر پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) فائیو میں شامل تمام غیر ملکی کھلاڑیوں کو واپس جانے کی پیشکش کر دی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے جمعہ کے روز معمول کے مطابق تمام ٹیموں کے مالکان سے کانفرنس کال پر  رابطہ کیا جس میں مندرجہ ذیل نکات پر اتفاق کیا گیا ہے۔

 پی ایس ایل 2020 شیڈول کے مطابق جاری رہے گی اور ملتان سلطانز اور پشاور زلمی کا شیڈول میچ آج رات 8 بجے نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں شروع ہو گا۔

یہ میچ بند دروازوں میں کھیلا جائے گا جہاں صرف پی سی بی سے منظور شدہ مخصوص افراد کو شرکت کی اجازت ہو گی۔ 

پی سی بی اور پی ایس ایل مینجمنٹ کا کہنا ہے کہ جو غیر ملکی کھلاڑی واپس اپنے ملک جانا چاہتے وہ جا سکتے ہیں۔

پی سی بی کا کہنا ہے قانون کے مطابق تمام ٹیموں کو متبادل کھلاڑیوں کے انتخاب کی اجازت ہو گی، جس کی منظوری ایونٹ ٹیکنکل کمیٹی دے گی۔

پی سی بی اس ضمن میں صورتحال کا باقاعدگی سے جائزہ لیتا رہے گا اور اس دوران وہ تمام ٹیموں کے مالکان سے رابطے میں رہے گا تاہم اب تک کسی کھلاڑی کا کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت نہیں آیا۔

کرکٹ بورڈ کے مطابق 9 غیر ملکی کھلاڑی پہلی دستیاب پرواز سے اپنے وطن جا رہے ہیں جن میں  پشاور زلمی کے ٹام بینٹن، لیام ڈاسن اور لیوس گریگری، لیام لیونگسٹن اور بریتھ ویٹ، کراچی کنگز کے ایلکس ہیلز ،کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے جیسن رائے اور ٹائمل ملز جب کہ  ملتان سلطانز کے  رائیلی روسو اور جیمز ونس شامل ہیں۔

ادھر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ٹیم مینجمنٹ کا کہنا ہے کہ گلیڈی ایٹرز کے کسی کھلاڑی نے گھر واپسی کی خواہش ظاہر نہیں کی، فی الحال کیمپ میں ساری صورتحال نارمل ہے، اگر  بعد میں صورتحال بدلی تو اس سے آگاہ کر دیا جائے گا۔

 پشاور زلمی کی مینجمنٹ نے پی ایس ایل چھوڑنے کا فیصلہ غیر ملکی کھلاڑیوں پر ہی چھوڑ دیا ہے۔

 زلمی مینجمنٹ کے مطابق غیر ملکی کھلاڑی اپنے وطن واپس جانا چاہیں تو جا سکتے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ  کورونا وائرس کے باعث صورتحال مسلسل تبدیل ہو رہی ہے جس پر مسلسل نظر رکھنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ تمام کھلاڑیوں کو اپنی مرضی سے لیگ چھوڑنے کی اجازت دے دی ہے کیونکہ کھلاڑیوں کا اعتماد اور یقین پی سی بی کے لیے سب سے اہم ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ابھی تک 10 غیر ملکی کھلاڑی اور ایک کوچ کی جانب سے لیگ چھوڑنے کا فیصلہ اس لیے لیا گیا ہے کہ انہیں مستقبل میں فلائٹ آپریشن معطل ہونے یا اپنے ممالک کے بارڈر بند ہونے کا خطرہ ہے۔

وسیم خان نے کہاکہ پی سی بی ان تمام کھلاڑیوں کی بحفاظت واپسی کو یقینی بنائے گا، دیگر کھلاڑیوں اور اسپورٹ اسٹاف کے لیے بھی یہی پروٹوکول اپنایا جائے گا۔

انہوں نے کہاکہ ماضی کی طرح پی سی بی صورتحال کا مسلسل جائزہ لیتا رہے گا اور ایونٹ کے شرکاء کی حفاظت اور صحت سے متعلق کوئی بھی فیصلہ کرنے سے ہچکچاہٹ کا مظاہرہ نہیں کرے گا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس کے باعث کراچی میں پی ایس ایل کے بقیہ میچز بھی بغیر شائقین کے کرانے کا اعلان کیا گیا ہے اسی لیے نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں پشاور زلمی اور ملتان سلطانز کے درمیان آج ہونے والا میچ تماشائیوں کے بغیر ہوگا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM