Can't connect right now! retry

صحت و سائنس
31 جولائی ، 2020

’کورونا وائرس دہائیوں سے چمگادڑوں میں بغیر نوٹس کے گردش کرتا رہا‘

فائل فوٹو

ایک نئے مطالعے میں کہا گیا ہے کہ لگتا ہے کہ نیا کورونا وائرس دہائیوں سے چمگادڑوں میں بغیر نوٹس کے گردش کرتا رہا ہے۔ 

نیچر مائیکرو بائیولوجی میں شائع ہونے والے مطالعے میں پنسلوینیا اسٹیٹ یونیورسٹی کے سینٹر برائے متعدی بیماری کے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ سارس کووڈ 2 پھیلانے والے جرثومہ کا سب سے زیادہ معقول ماخذ ہارس شو چمگادڑ ہیں۔ 

سائنسدانوں کے مطابق اس مرکز میں وائرس کے ماخذ پر زیادہ بحث کی گئی ہے جیسا کہ یہ وبائی مرض معیشتوں کا راستہ روکنا جاری رکھے ہوئے ہےاور اموات کی تعداد 6 لاکھ 54 ہزار سے بڑھ گئی ہے۔

امریکی حکومت کی جانب سے یہ قیاس کہ یہ جرثومہ چینی لیب سے نکلا تھا، اس کے بعد ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے اس ماہ اس معاملے کا مطالعہ کرنے ماہرین کو چین بھیجا تھا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM