Can't connect right now! retry

ماں اور بچوں میں غذائی قلت کے خاتمے کیلئےوفاق اور صوبوں کا مشترکہ منصوبہ شروع کرنی‏کا فیصلہ

مشترکہ مفادات کونسل (سی سی آئی) نے  ماؤں اور بچوں میں غذائی قلت کے خاتمے کے لیے 350 ارب روپے کی لاگت سے مشترکہ منصوبہ شروع کرنے ‏کا فیصلہ کیا ہے، پانچ سالہ منصوبے کے لیے آدھی رقم وفاق فراہم کرے گا۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ہوا جس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ نے شرکت کی۔

مشترکہ مفادات کونسل نےماؤں اور بچوں میں غذائی قلت کے خاتمے کے لیے 350 ارب روپے کی لاگت سے 5 سالہ مشترکہ منصوبہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ہوا جس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ نے شرکت کی— فوٹو: پی ٹی آئی

اعلامیے کے مطابق وفاقی حکومت بچوں میں اسٹنٹنگ کی روک تھام کے لیے 175 ارب روپے فراہم کرے گی، اس منصوبے کے ذریعے ڈیڑھ کروڑ خواتین اور 39 لاکھ بچوں کی غذائی قلت دور ہوگی۔

نئے اور موجودہ ہیلتھ ورکرز کی استعداد کار بڑھانا، ریسرچ کی سہولیات اور مانیٹرنگ ‏وفاقی حکومت کی ذمہ داری ہو گی۔ صوبے لیڈی ہیلتھ ورکرز، کمیونٹی ہیلتھ ورکرز، انتظامی امور اور ڈیٹا فراہم ‏کریں گے۔

بجلی، گیس اور دیگر ایندھن کی قیمتوں کے معاملے کے تعین کے لیے آئندہ سال جنوری میں ‏مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ توانائی مسائل کے ملک گیر اثرات ہوتے ہیں، توانائی کے امور پر صوبوں میں اتفاق رائے ہونا چاہیے تاکہ عوام کو فائدہ ہو۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM