Can't connect right now! retry

پاکستان
02 اگست ، 2021

2018 میں شکست کیوں ہوئی؟ شاہد خاقان اور شہباز شریف میں اختلاف رائے

مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی جانب سے 2018 کے انتخابات میں پارٹی شکست کو غلط حکمت عملی کا نتیجہ قرار دینے پر شاہد خاقان عباسی نےکہا ہےکہ اس میں ن لیگ کی کوئی غلطی نہیں تھی۔ 

جیو نیوز کے پروگرام ' آج شاہزیب خانزادہ کیساتھ' میں گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم اور ن لیگ کے سینیئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی نے واضح کیا کہ اس میں ن لیگ کی کوئی غلطی نہیں تھی اور نہ ہی نواز شریف کی نااہلی تھی۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ  یہ ایک طے شدہ معاملہ تھا،سیاسی جماعت کی الیکشن میں غلطیاں نہیں ہوتیں،ہم الیکشن میں گئے اور جوکچھ الیکشن میں ہوا وہ تاریخ کا حصہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی تاریخ کی بہترین حکومت 2013 سے 2018 کی تھی، اگرانصاف کے دوہرے معیارہوں گے تو اس میں ن لیگ اورنوازشریف کی کیا غلطی ہے؟ شہبازشریف نوازشریف کے ساتھ کھڑے تھے اورکھڑے ہیں۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جوکچھ 2018 کے الیکشن میں ہوا اس کی حقیقت سامنے آنی چاہیے، سیاست میں مفاہمت یا مزاحمت نہیں ہوتی، سیاست میں اصول ہوتے ہیں،ن لیگ میں کوئی سخت یا نرم بیانیہ نہیں،ملک کوآئین کے مطابق چلنا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ  الیکشن میں دھاندلی پرسمجھوتہ نہیں ہوسکتا، ٹرتھ کمیشن بنایا جائے جس میں حقائق کوسامنے لایا جائے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز جیو نیوز کے پروگرام ’جرگہ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھاکہ  اگر 2018 کے انتخابات سے قبل مشاورت کے بعد صحیح حکمت عملی بناتے تو نوازشریف چوتھی مرتبہ ملک کے وزیراعظم بن جاتے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM