پاکستان
11 اکتوبر ، 2021

گٹکے اور ماوے کی خرید و فروخت روکنے کیلئے رینجرز کی مدد لی جائے، سندھ ہائیکورٹ

سندھ ہائیکورٹ نے گٹکا، ماوا اور دیگر مضر صحت اشیا کی فروخت میں ملوث پولیس اہلکاروں اور افسران کے خلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے اس کاروبار میں ملوث افسران کی فہرستیں مرتب کرنے کی ہدایت کردی۔

سندھ ہائیکورٹ میں گٹکا، ماوا اور دیگر مضر صحت اشیا کی فروخت کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔

عدالت نے گٹکا اور ماوا کی فروخت میں ملوث پولیس اہلکاروں اور افسران کے خلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے فروخت میں ملوث افسران کی فہرستیں مرتب کرنے کی ہدایت کردی۔

جسٹس صلاح الدین پہنور نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ لگتا ہے گٹکے کی فروخت میں پولیس کے اعلیٰ افسران بھی شامل ہیں، ایسے پولیس اہلکاروں اور افسران کی جائیدادوں کی تفصیلات بھی پیش کی جائیں۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ گٹکا اور ماوا کھانے والوں کو خطرناک بیماریاں لاحق ہورہی ہیں اور پولیس کی سرپرستی کے بغیر گٹکے فروخت ممکن ہی نہیں ہے۔

عدالت نے حکم دیا کہ  گٹکے اور مارے کی خرید و فروخت روکنے کیلئے رینجرز کی مدد لی جائے جبکہ عدالت بھی رینجرز کو پولیس کی مدد کرنے کی ہدایت کرے گی۔

عدالت نے مزمل ممتاز ایڈووکیٹ کی فریق بننے کی درخواست منظور کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM