دنیا
21 جون ، 2022

ہانگ کانگ کا مشہور فلوٹنگ ریسٹورنٹ جنوبی چین کے سمندر میں ڈوب گیا

ہانگ کانگ کا مشہور فلوٹنگ ریسٹورنٹ جنوبی چین کے سمندر میں ڈوب گیا۔—فوٹو:فائل
ہانگ کانگ کا مشہور فلوٹنگ ریسٹورنٹ جنوبی چین کے سمندر میں ڈوب گیا۔—فوٹو:فائل

ہانگ کانگ کا مشہور فلوٹنگ(تیرنےوالا) ریسٹورنٹ جنوبی چین کے سمندر میں ڈوب گیا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق ہانگ کانگ کا مشہور جمبو فلوٹنگ ریسٹورنٹ جسے ایک بحری جہاز پربنایا گیا تھا ایبرڈین بندرگاہ سے دور ہٹائے جانے کے ایک ہفتے سے بھی کم عرصے بعد  جنوبی چین  کے سمندر میں ڈوب گیا۔

اطلاعات کے مطابق  ہفتے کے روز  فلوٹنگ ریسٹورنٹ کو اس وقت ناپسندیدہ حالات کا سامنا کرنا پڑا جب وہ جنوبی بحیرہ چین میں جزیرہ شیشا، جسے پیراسل جزائر بھی کہا جاتا ہے سے گزر رہا تھا کہ   پانی جہاز میں داخل ہونا شروع ہوگیا اور دیکھتے ہی دیکھتے وہ سمندر کی نظر ہوگیا۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ سمندر کی گہرائی کی وجہ سے ریسٹورنٹ کو بچانے کا کام انتہائی مشکل ہے جبکہ  فلوٹنگ ریسٹورنٹ ڈوبنے کے واقعے میں عملے کا کوئی رکن زخمی نہیں ہوا۔

رپورٹس کے مطابق مالی مشکلات کے شکار دوسال سے بند ریسٹورنٹ کو شہر سے منتقل کیا جارہا تھا۔

مالی مشکلات کے شکار دوسال سے بند ریسٹورنٹ کو شہر سے منتقل کیا جارہا تھا۔—فوٹو:فائل
مالی مشکلات کے شکار دوسال سے بند ریسٹورنٹ کو شہر سے منتقل کیا جارہا تھا۔—فوٹو:فائل

واضح رہے کہ 1976 میں کھولا گیا جمبو فلوٹنگ ریسٹورنٹ  کی لمبائی تقریباً 80 میٹر تھی اور یہ ہانگ کانگ میں چار دہائیوں سے سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنا رہا، جس میں ملکہ الزبتھ دوم  اور ہالی وڈ اداکار  ٹام کروز سمیت مشہور شخصیات نے کھانا کھایا۔

تاہم یہ ریسٹورنٹ کورونا کی وجہ سے 2020 میں بند ہوگیا  تھا اور انتظامیہ کی جانب سے اپنے تمام عملے کو فارغ کردیا گیا تھا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM