Election 2024 Election 2024

دنیا
Time 11 فروری ، 2024

حماس یو این ایجنسی کے ہیڈکوارٹر کے نیچے کمانڈ سرنگ چلا رہا ہے: اسرائیل کا دعویٰ

فلسطین نے اسرائیل کے دعوے کو غلط اور جھوٹ پر مبنی قرار دے دیا ہے، فلسطین کے مطابق اسرائیل امدادی ایجنسی کو داغدار کرنے کے لیے غلط معلومات فراہم کر رہا ہے/فوٹوبشکریہ رائٹرز
 فلسطین نے اسرائیل کے دعوے کو غلط اور جھوٹ پر مبنی قرار دے دیا ہے، فلسطین کے مطابق اسرائیل امدادی ایجنسی کو داغدار کرنے کے لیے غلط معلومات فراہم کر رہا ہے/فوٹوبشکریہ رائٹرز

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ فلسطینیوں کو امداد فراہم کرنے والی اقوام متحدہ کی ایجنسی انروا کے غزہ ہیڈکوارٹرز کے نیچے حماس کی طویل سرنگ موجود ہے۔

خبر رساں ادارے رائٹرز کی ایک رپورٹ کے مطابق اسرائیلی فورسز نے سیکڑوں میٹر طویل سرنگ کا نیٹ ورک دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے جسے انروا کے غزہ میں قائم  ہیڈکوارٹر کے نیچے سے جزوی طور پر چلایا جا رہا تھا۔

رپورٹ کے مطابق اسرائیل نے اس سرنگ کو حماس کی جانب سے فلسطینیوں  کے لیے امدادی ایجنسی کے استحصال کا نیا ثبوت قرار دیا ہے۔

سرنگ 700 میٹر لمبی اور 18 میٹر گہری ہے : اسرائیلی فوج 

اسرائیلی فوج کی جانب سے میڈیا کو دکھائی گئی سرنگ کے حوالے سے اسرائیل  کا کہنا ہے کہ یہ 700 میٹر لمبی اور 18 میٹر گہری سرنگ ہے۔

فوٹوبشکریہ غیر ملکی میڈیا
فوٹوبشکریہ غیر ملکی میڈیا

میڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں اسرائیلی فوج کے ایک لیفٹیننٹ کرنل کا کہنا تھا کہ سرنگ حماس کے انٹیلیجنس یونٹس میں سے ایک ہے، جہاں سے وہ دوران جنگ سب کچھ کرتے رہے۔

اسرائیلی لیفٹیننٹ کرنل نے میڈیا کو بتایا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ اسرائیلی پیش قدمی کو بھانپتے ہوئے  حماس نے سرنگ کو خالی کر دیا،سرنگ میں اسرائیلی فوج کے پہنچنے تک مواصلاتی رابطے کاٹ دیے گئے، ہم جانتے ہیں کہ حماس کے افراد انروا  میں کام کر رہے ہیں ہماری خواہش ہے کہ  ہر بین الاقوامی تنظیم غزہ میں کام کرے، ہمیں اداروں سے کوئی  مسئلہ نہیں ہے،ہمارا مسئلہ حماس ہے۔

فلسطین کا مؤقف

دوسری جانب فلسطین نے اسرائیل کے دعوے کو غلط اور جھوٹ پر مبنی قرار دیا ہے۔

 فلسطینی حکام کے مطابق اسرائیل  امدادی ایجنسی کو  داغدار کرنے کے لیے غلط معلومات فراہم کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ   امدادی ایجنسی میں غزہ کی پٹی کے  13,000 افراد کام کرتے ہیں اور مقامی رہائشی کئی برسوں سے دی جانے والی عالمی امداد پر انحصار کر رہے ہیں، ایجنسی کی امداد سے کئی  اسکول ، طبی مراکز  اور دیگر سماجی خدمات کے ادارے چلائے جارہے ہیں۔

امدادی ایجنسی انرواکا مؤقف کیا ہے؟

دوسری جانب امدادی ایجنسی کا کہنا ہے کہ ایجنسی نے اسرائیل حماس جنگ شروع ہونے کے 5  دن بعد یعنی 12 اکتوبر کو ہیڈ کوارٹر خالی کر دیا تھا، لہٰذا وہ سرنگ کی 'دریافت کی تصدیق یا اس پر تبصرہ نہیں کرسکتی'۔

مزید خبریں :