Time 20 مئی ، 2024
دنیا

ایرانی میڈیا کا صدر ابراہیم رئیسی کا ہیلی کاپٹر تلاش کرنے کا دعویٰ، ہلالِ احمر کی تردید

خبر رساں ادارے کے مطابق ہیلی کاپٹر میں ایرانی صدر کے ساتھ سینیئر حکام بھی سوار تھے— فوٹو: تسنیم نیوز
خبر رساں ادارے کے مطابق ہیلی کاپٹر میں ایرانی صدر کے ساتھ سینیئر حکام بھی سوار تھے— فوٹو: تسنیم نیوز 

ایرانی میڈیا  نے دعویٰ کیا ہےکہ  ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کا حادثے کا شکار  ہیلی کاپٹر تلاش کرلیا گیا ہے جب کہ ایرانی ہلال احمر نے اس کی تردید کی ہے۔

ایرانی صدر  ابراہیم رئيسی کا ہیلی کاپٹر  شدید دھند  والے پہاڑی علاقے میں حادثےکا شکار ہوا تھا۔

سرکاری میڈیا کے مطابق ہیلی کاپٹر میں وزیر خارجہ حسین امیر عبد اللہیان، مشرقی آذربائیجان کےگورنر ملک رحمتی اور صوبے میں ایرانی صدرکے نمائندے آیت اللہ محمد علی بھی سوار تھے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی صدر  ایرانی صوبے مشرقی آذربائیجان میں  ایران اور   آذربائیجان کے سرحدی علاقے میں ایک ڈیم کا افتتاح کرکے  واپس آرہے تھے۔ ڈیم کے افتتاح کے موقعے پر آذربائیجان کے صدر الہام علیوف بھی موجود تھے۔

ایرانی صدر کے ہیلی کا پٹر کو   شدید دھند کے دوران پہاڑی علاقوں سے گزرتے ہوئےحادثہ پیش آيا۔

ڈیم کے افتتاح کے موقع پر ایرانی صدر کی آذربائیجان کے صدر کے ساتھ تصویر، فوٹو: ارنا
ڈیم کے افتتاح کے موقع پر ایرانی صدر کی آذربائیجان کے صدر کے ساتھ تصویر، فوٹو: ارنا

ایران کی ایک نیم سرکاری خبر ایجنسی کے مطابق ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر نے ہنگامی لینڈنگ کی، فی الحال ہیلی کاپٹر کی ہنگامی لینڈنگ میں کسی جانی نقصان کے بارے میں معلومات دستیاب نہیں ہیں۔

خراب موسم کی وجہ سے سرچ آپریشن میں مشکلات کا سامنا ہے: ایرانی وزیر داخلہ

ایرانی حکام کے مطابق سامنے آنے والی صورتحال تشویشناک ہے، وزیر داخلہ احمد واحدی نے ہیلی کاپٹر حادثے اور صدر  رئيسی سے رابطہ منقطع ہونےکی تصدیق کی ہے۔

اس سے قبل ایرانی وزیر داخلہ احمد واحدی کا کہنا تھا کہ ایران کے مشرقی آذربائیجان صوبے جولفہ کے قریب سرچ آپریشن جاری ہے، خراب موسم کی وجہ سے سرچ آپریشن میں مشکلات کا سامنا  ہے۔ صدر  رئيسی کے ساتھیوں سے رابطے میں ہیں لیکن متعلقہ علاقے میں خراب موسم کے باعث کمیونیکشن بھی چیلنج بنی ہوئی ہے۔

حادثےکی خبر سامنے آنے کے بعد مشہد میں بڑی تعداد میں شہری  حضرت امام علی رضا کے مزار  پر جمع ہوگئے اور  صدر  رئیسی کی سلامتی کی دعائیں مانگی گئيں۔

ہیلی کاپٹر میں ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبد اللہیان بھی سوار تھے،فوٹو: فائل
 ہیلی کاپٹر میں ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبد اللہیان بھی سوار تھے،فوٹو: فائل

دوسری جانب ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کی زیر صدارت ایرانی سپریم کونسل کا ہنگامی اجلاس ہوا۔

آیت اللہ خامنہ ای نے ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کی سلامتی کے لیے دعا کی ہے اور کہا ہےکہ ملک کی انتظامیہ اس واقعے سے متاثر نہیں ہوگی۔

سعودی عرب، قطر  اور ترکیہ کی جانب سے ایران کو ہیلی کاپٹر کی تلاش میں مدد کی پیشکش کی گئی ہے۔