Can't connect right now! retry

صحت و سائنس
17 ستمبر ، 2019

حاملہ خواتین کے پیراسیٹامول کے استعمال سے بچے میں نقائص کا خطرہ

فائل فوٹو

دوران حمل درد کی صورت میں پیراسیٹامول کا استعمال سب سے زیادہ محفوظ تصور کیا جاتا تھا لیکن برسٹل یونیورسٹی کی تازہ ترین ریسرچ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ دوران حمل پیراسیٹامول کے استعمال سے نومولود میں اے ڈی ایچ ڈی کا خطرہ یعنی بیہیوریل نقائص کاخدشہ ہوتا ہے۔ 

برسٹل یونیورسٹی کے ریسرچرز کی تحقیقی رپورٹ دیتے ہوئے ڈیلی مرر نے خبر دی ہے کہ جو خواتین دوران حمل پیراسیٹامول لیتی ہیں ان کے بچوں میں یہ نقائص پیدا ہوسکتے ہیں۔

ریسرچرز نے یہ رپورٹ برسٹل کے 14 ہزار بچوں کے قبل از سکول آئی کیو ٹیسٹ کے تجزیئے کے بعد تیار کی ہے۔

خواتین نے بتایا کہ جب وہ 7 ماہ کی حاملہ تھیں تو انہوں نے پیراسیٹامول استعمال کیا تھا جب کہ بعض نے حمل کے آخری تین ماہ کے دوران درد شکنی کیلئے اس کا استعمال کیا تھا۔

ریسرچرز نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ ای سگریٹ استعمال کرنے والی خواتین مشکل سے حاملہ ہوتی ہیں، سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کے پیرا سیٹا مول کے استعمال کی وجہ سے بچوں میں ہائپر ایکٹیویٹی اور کسی چیز پر توجہ مرکوز کرنے میں مشکلات کا بھی پتہ چلایا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM