Can't connect right now! retry

نواز شریف کو دل کی شریان سکڑنے کے سبب ہارٹ اٹیک کا خطرہ ہے: اسپتال ذرائع

لندن: سابق وزیراعظم نواز شریف لندن میں علاج کے لیے مقیم ہیں جبکہ اسپتال ذرائع نے خدشے کا اظہار کیا ہے کہ انہیں ہارٹ اٹیک کا خطرہ ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف 19 نومبر سے علاج کی غرض سے لندن میں مقیم ہیں جہاں ان کے مسلسل ٹیسٹ اور طبی معائنہ کیا جارہا ہے۔

نواز شریف کا گزشتہ روز انجائنا اور آئندہ علاج کے لیے پی ای ٹی اسکین کیا گیا، اسپتال ذرائع کے مطابق دل کو خون پہنچانے والی شریان سکڑنے کے سبب نواز شریف کو ہارٹ اٹیک کا خطرہ ہے۔

اسپتال ذرائع نے بتایا کہ شریان میں پیچیدگی کے سبب نواز شریف کو انجائنا کی تکلیف ہے جبکہ گزشتہ روز ہونے والے پی ای ٹی اسکین رپورٹ کرسمس کے بعد جاری کی جائے گی۔

اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ دل میں خون کی روانی برقرار رکھنے کے لیے ’کورونری انٹروینشن‘ کی ضرورت ہے، اگر ’انٹروینشن‘ کامیاب نہ ہوئی تو ’ہارٹ بائی پاس‘ کرنا پڑ سکتا ہے۔

دوسری جانب نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان رپورٹ کی تصدیق یا تردید سے انکار کرچکے ہیں تاہم گزشتہ ہفتے انہوں نے نواز شریف کی ’کورونری ڈیزیز‘ کی تصدیق کی تھی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل 28 نومبر کو بھی سابق وزیر اعظم کا لندن کے برج اسپتال میں پوزیٹرون ایمیشن ٹوموگرافی (پی ای ٹی) اسکین کیا گیا تھا۔

پی ای ٹی اسکین کی رپورٹ کے حوالے سے نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے کہا کہ نواز شریف کے دائیں بغل (رائٹ ایگزیلا) میں ایک سے زائد گلٹیاں ہیں جو بڑی ہو چکی ہیں، مرض کی مزید تشخیص جاری ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM