Can't connect right now! retry

گائے کا پیشاب اور گوبر کورونا وائرس کا علاج ہے: بھارتی رکن اسمبلی

گائے ہمارا اثاثہ ہے جس کے پیشاب اور گوبر سے کینسر جیسے موذی مرض سمیت متعدد امراض کی ادویات تیار کی جا چکی ہیں: بی جے پی کی رکن اسمبلی۔ فوٹو: فائل

پوری دنیا کے سائنسدان جہاں کورونا وائرس کے بچاؤ کے لیے دوائی ایجاد کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں ایسے ہیں بھارت کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی) کی رکن اسمبلی نے موذی مرض سے بچاؤ کے لیے انوکھا طریقہ بتا دیا ہے۔

بھارتی ریاست آسام سے بی جے پی کی رکن اسمبلی سمن ہری پریا کا کہنا ہے ’میں سمجھتی ہوں کہ گائے کا پیشاب اور گوبر کو کورونا وائرس کے علاج کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے‘۔

بی جے پی کی رکن اسمبلی سمن ہری پریا۔ فوٹو: فائل

سمن ہری پریا کا کہنا ہے کہ گائے ہمارا اثاثہ ہے جس کے پیشاب اور گوبر سےکینسر جیسے موذی مرض سمیت متعدد امراض کی ادویات تیار کی جا چکی ہیں۔

بی جے پی کی رکن اسمبلی کا مزید کہنا تھا کہ گجرات کے ایک اسپتال میں کینسر کے مریضوں کو گائے کے ساتھ رکھا جاتا ہے، مریضوں کے جسم پر گائے کا گوبر ملا جاتا ہے اور گائے کے پیشاب سے بنی دوا انھیں پلائی جاتی ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس دسمبر سے چین کے شہر ووہان سے سامنے آنے والا کورونا وائرس دنیا کے 84 ممالک میں پھیل چکا ہے، وبا سے اب تک دنیا بھر میں 3 ہزار 285 افراد ہلاک اور 95 ہزار سے زائد متاثر ہو چکے ہیں، بھارت میں بھی کورونا وائرس کے 29 مریض سامنے آئے ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM