Can't connect right now! retry

پاکستان
22 مارچ ، 2020

سندھ کے بعد پنجاب اور بلوچستان کا بھی فوج تعینات کرنے کا مطالبہ

ملک میں کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر حکومت سندھ کے بعد پنجاب اور بلوچستان نے بھی لاک ڈاؤن کے لیے وفاقی حکومت سے فوج کو تعینات کرنے کا مطالبہ کر دیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے مطابق موجودہ صورتحال کے پیش وفاق سے نظر سیکشن 245 کے تحت صوبے میں پاک فوج سے مدد کی اپیل کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت ایمرجنسی ہے، ہم سب کو مل کو اس چیلنج کا مقابلہ کرنا ہو گا۔

ان کا کہنا تھا کہ پنجاب میں کورونا سے نمٹنے کے لیے5 خصوصی اسپتال بنا رہے ہیں، ایمرجنسی کی صورت میں پنجاب حکومت ایک لاکھ لوگوں کی دیکھ بھال کر سکتی ہے۔

عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب میں کسی قسم کی خوراک کی قلت نہیں ہے، انسانی ہمدردی کی بنیاد پر بلوچستان کی مالی امداد کا اعلان کیا ہے۔

بلوچستان کی بھی فوج تعینات کرنے کی درخواست

حکومت بلوچستان نے بھی کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے صوبے میں پاک فوج کی تعیناتی کے لیے وفاقی وزارت داخلہ سے مدد طلب کی ہے۔

حکومت بلوچستان نے خط کے ذریعے وفاقی وزارت داخلہ کو کہا کہ صوبے میں کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے فوج کے دستوں کی تعیناتی کی منظوری دی جائے۔

واضح رہے کہ لاک ڈاؤن کی صورت میں عوام کو بلا ضرورت گھر سے باہر نکلنے یا گاڑی سڑک پر لانے کی اجازت نہیں ہو گی، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے خلاف ورزی کرنے والوں کو حراست میں لے سکیں گے۔

میڈیکل اسٹورز، کریانہ اسٹورز،کھانے پینے کی اشیاء کی دکانیں اور دوا ساز فیکٹریاں کھلی رہیں گی اور ہوٹلز اور ریسٹورنٹس سے کھانے پینے کی اشیا کی گھروں پر ڈیلیوری کی جا سکیں گی۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM