Can't connect right now! retry

انٹرٹینمنٹ
14 جولائی ، 2020

سشانت سنگھ دو خطرناک بیماریوں میں مبتلا تھے

فائل فوٹو: سشانت سنگھ

بالی وڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی کی حوالے سے تا حال تحقیقات کی جارہی ہیں جب کہ حال ہی میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ اداکار ڈپریشن کی 2 خطرناک بیماریوں میں مبتلا تھے جس کا وہ علاج بھی کروا رہے تھے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی کے معاملے پر تفتیش کرنے والے ایک پولیس افسر نے انکشاف کیا ہے کہ اداکار ڈپریشن کی 2 بیماریوں کا علاج کروا رہے تھے جب کہ لاک ڈاؤن سے ایک ہفتہ قبل وہ ہندوجا اسپتال میں  علاج کرانے کی غرض سے اسپتال میں داخل بھی ہوئے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ سشانت سنگھ 'پیرانویا' اور 'بائپولر ڈس آرڈر' کی خطرناک بیماریوں میں مبتلا تھے۔

پولیس کا مزید کہنا تھا کہ اداکار اپنی مصروفیات کے باوجود بھی خود کو اکیلا محسوس کرتے تھے اور یہ بات ان کے گواہوں سے پوچھ گچھ کے بعد سامنے آئی ہے۔

خیال رہے کہ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی کو ایک مہینہ گزر چکا ہے اور 14 جون سے اب تک باندرا پولیس اداکار کی موت کے معاملے کی تفتیش کر رہی ہے اور اس سلسلے میں اب تک تقریباً 3 درجن لوگوں سے پوچھ گچھ بھی کرچکی ہے۔

14 جون کو 34 سالہ اداکار سشانت سنگھ نے مبینہ طور پر اپنے گھر میں پنکھے سے لٹک کر خود کشی کرلی تھی۔

اداکار سشانت سنگھ نے اپنے کیرئیر کا آغاز ڈرامہ 'کس دیش میں ہے میرا دل' سے کیا تھا بعد ازاں انہوں نے فلم 'پی کے' میں سرفراز کا کردار ادا کیا جس سے وہ کافی مقبول ہوئے۔

علاوہ ازیں سُشانت سنگھ نے ’ایم ایس دھونی'، 'کیدارناتھ' اور 'رابطہ' جیسی فلموں میں بھی اداکاری کی۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM