Can't connect right now! retry

7 ممبران اسمبلی کے پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں داخلے پر پابندی عائد

اسلام آباد: اسپیکر قومی اسمبلی نے گزشتہ روز قومی اسمبلی میں ہونے والی ہنگامہ آرائی پر ایکشن لیتے ہوئے 7 ممبران اسمبلی کے پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں داخلے پر پابندی عائد کردی۔

جیونیوز کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے گزشتہ روز ایوان میں شدید ہنگامی آرائی کا نوٹس لیا تھا اور اس کی مکمل تحقیقات کا اعلان کیا تھا۔

اسپیکر قومی اسمبلی نے اس حوالے سے آج ایک اجلاس بلایا جس میں گزشتہ روز کی فوٹیجز دیکھی گئیں اور ایوان میں ہونے والی ہنگامہ آرائی کے معاملے کا جائزہ لیا گیا۔

اسپیکر قومی اسمبلی نے ایوان میں نازیبا الفاظ استعمال کرنے والے ممبران پر پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں داخلے پر پابندی عائد کردی۔

قومی اسمبلی سے جاری اعلامیے کے مطابق جن اراکین پر پابندی لگائی گئی ہے ان میں تحریک انصاف کے تین، (ن) لیگ کے تین اور پیپلزپارٹی کا ایک رکن شامل ہے۔

اعلامیے کے مطابق اسپیکر نے  پیپلز پارٹی کے آغا رفیع اللہ، (ن) لیگ کے شیخ روحیل اصغر ، علی گوہر خان اور  چوہدری حامد حمید  پرپابندی عائد کی ہے جب کہ تحریک انصاف کے علی نواز اعوان، عبدالمجید خان اور  فہیم خان پر پابندی لگائی گئی ہے۔

اعلامیے کا عکس

اعلامیے کےمطابق ان اراکین پر تاحکم ثانی پابندی عائد کی گئی ہے جب کہ قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب اس سلسلے میں متعلقہ اراکین اور اسمبلی سکیورٹی کو احکامات جاری کردیے گئے ہیں۔

واضح رہےکہ گزشتہ روز قومی اسمبلی میں شدید  ہنگامہ آرائی ہوئی جس دوران اپوزیشن اور حکومتی اراکین نے ایک دوسرے کے خلاف نازیبا الفاظ استعمال کیے جب کہ بجٹ کی کاپیاں بھی ایک دوسرے کو ماری گئیں۔

اسپیکر قومی اسمبلی کا بیان

دوسری جانب اسد قیصر نے ٹوئٹر پر جاری بیان میں کہا کہ قائدحزب اختلاف کی تقریرکے دوران خلل پیدا کرنے والے ارکان کا رویہ غیر پارلیمانی تھا، ان اراکین کا رویہ نامناسب تھا، ان کے ایوان میں داخلے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔


مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM