Can't connect right now! retry

کھیل
16 ستمبر ، 2021

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق بولنگ کوچ وقار یونس نے استعفیٰ دینے کی وجہ بتادی

وقار یونس کا کہنا تھا کہ مجھے اور مصباح کو اندازہ ہوگیا تھا کہ کیا ہونے والا ہے، اس سے پہلے کہ ہمیں نکالا جاتا ہم نے خود استعفیٰ دے دیا۔ —فوٹو:فائل
وقار یونس کا کہنا تھا کہ مجھے اور مصباح کو اندازہ ہوگیا تھا کہ کیا ہونے والا ہے، اس سے پہلے کہ ہمیں نکالا جاتا ہم نے خود استعفیٰ دے دیا۔ —فوٹو:فائل 

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق بولنگ کوچ وقار یونس کا کہنا ہےکہ  مصباح نے استعفیٰ دیا تو میرا عہدہ رکھنے کاجواز نہیں بنتا تھا جبکہ کووڈ 19 بھی استعفیٰ دینے کی ایک وجہ بنا۔ 

وقار یونس کا کہنا تھا کہ مجھے اور مصباح کو اندازہ ہوگیا تھا کہ کیا ہونے والا ہے، اس سے پہلے کہ ہمیں نکالا جاتا ہم نے خود استعفیٰ دے دیا۔

قومی ٹیم کے سابق بولنگ کوچ نے کہا کہ رمیز راجا پہلے چیئرمین ہیں جو کرکٹ کو اچھی طرح سمجھتے ہیں،ان سے بہتر کرکٹ کوئی نہیں سمجھے گا۔

انہوں نے کہا کہ صرف ہم نہیں بدلے پورا کرکٹ بورڈ بدلاہے  مصباح نے استعفیٰ دیا تو میرا عہدہ رکھنے کاجواز نہیں بنتا تھا جبکہ کووڈ 19 بھی استعفیٰ دینے کی ایک وجہ بنا۔

ان کا کہنا تھا کہ عاقب جاوید کو تو کوچنگ کے بارے میں بولنا ہی نہیں چاہیے جبکہ وسیم اکرم بطور کو چ کامیاب رہے ہیں انہیں  پاکستان کرکٹ بورڈ میں بھی آناچاہیے۔

وقار یونس نے قومی ٹیم کی سلیکشن پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ٹیم سلیکشن میں میرا کوئی کردار نہیں رہا  جبکہ سرفرازکوکپتانی سےہٹانےکےفیصلےسےمیراکوئی لینادینانہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ کسی کھلاڑی کو عمر زیادہ ہونے کے بہانے نکالنا زیادتی ہے جبکہ  شعیب ملک اس وقت سب سے فٹ کھلاڑی ہیں اور  اعظم خان میں ٹیلنٹ ہے۔

وقار یونس نے مزید کہا کہ کپتان کس کو بنانا ہے یہ چیئرمین کا استحقاق ہوتا ہے اور بابر اعظم بااختیار کپتان ہیں یا نہیں مجھے علم نہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں بولنگ کوچ تھا، بولرزسےپوچھیے میں کیسا کوچ تھا جبکہ عامر کی پرفارمنس نہیں تھی اس لیے ڈراپ کیا گیا تھا اور میں نے عامر کو کہا تھا کہ آپ نے غلط وقت پر ٹیسٹ کرکٹ چھوڑی ۔

اس کے علاہ ان کا کہنا تھاکہ محمد عامر نے جونیئرکرکٹرکیلئےکنٹریکٹ نہیں لیا بہت اچھی بات ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM