Can't connect right now! retry

دنیا
12 اکتوبر ، 2021

ویڈیو: حجاب نہ کرنے پر خاتون فارماسسٹ پر ساتھ کام کرنے والی خواتین کا تشدد

مصر میں ایک خاتون فارماسسٹ کو حجاب نہ پہننے پر خواتین کی جانب سے تشدد کا نشانہ بنائے جانے کی ویڈیو سامنے آئی ہے۔

عرب میڈیا رپورٹ کے مطابق واقعہ مصر کے صوبے الشرقیہ میں پیش آیا جہاں ایک دیہی طبی مرکز  میں خاتون فارماسسٹ ایزیس مصطفیٰ کو ان کی ساتھی خواتین نے مبینہ طور پر حجاب نہ پہننے پر زدوکوب کیا۔

اس حوالے سے سامنے آنے والی ویڈیو میں دو خواتین کو ایک خاتون پر تشدد کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے جبکہ ایک مرد بیچ بچاؤ کی کوشش کررہا ہے البتہ ویڈیو میں واضح طور پر یہ نہیں دکھایا گیا کہ جس پر تشدد کیا جارہا ہے وہ ایزیس مصطفیٰ ہی ہیں۔

البتہ بعد ازاں اپنے انٹرویو میں ایزیس مصطفیٰ نے بتایا کہ انہیں حجاب نہ کرنے پر خواتین نے تشدد کا نشانہ بنایا۔

عرب میڈیا نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا کہ ایزیس کو اپنے ساتھ کام کرنے والی خواتین کی جانب سے ایک عرصے سے خراب برتاؤ کا سامنا تھا اور ان کے ساتھ کام کرنے والی خواتین ایزیس کے حجاب نہ کرنے اور پہناوے کو لے کر ان سے اختلاف رکھتی تھیں۔

جھگڑے والے روز  ان خواتین نے ایزیس کو حاضری کے رجسٹر میں دستخط کرنے سے روک دیااور اس پر معاملہ جھگڑے اور پھر ہاتھا پائی تک پہنچ گیا۔

سوشل میڈیا پر مصر کے عوامی حلقوں نے شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس واقعے کی فوری تحقیقات کرائی جائیں۔ فارماسسٹ نے اپنی دیگر تصاویر بھی جاری کی ہیں جن میں ان پر جسمانی تشدد اور حملے کے نشانات واضح طور پر نظر آ رہے ہیں۔

فارماسسٹ نے اپنی دیگر تصاویر بھی جاری کی ہیں جن میں ان پر جسمانی تشدد اور حملے کے نشانات واضح طور پر نظر آ رہے ہیں— فوٹو: سوشل میڈیا
فارماسسٹ نے اپنی دیگر تصاویر بھی جاری کی ہیں جن میں ان پر جسمانی تشدد اور حملے کے نشانات واضح طور پر نظر آ رہے ہیں— فوٹو: سوشل میڈیا

الشرقیہ صوبے کے گورنر ممدوح غراب نے ایزیس مصطفی کو ملاقات کی دعوت دی تا کہ وہ واقعے پر معذرت پیش کر سکیں۔

ساتھ ہی گورنر نے واقعے کی وسیع تحقیقات اور تمام قانونی اقدامات کیے جانے کا بھی حکم جاری کیا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM