کاروبار
15 اکتوبر ، 2021

مِلز مالکان کی گرفتاری پر شوگر ملز ایسوسی ایشن کا ردعمل آگیا

شوگر ملز ایسوسی ایشن نے شوگر ملز مالکان کو گرفتار کرنےکی مذمت کرتے ہوئےکہا ہے کہ مطالبات نہ مانے گئے تو وہ یکم نومبر سے کرشنگ شروع نہیں کریں گے۔

لاہور میں پاکستان شوگر ملز ایسوسی ایشن کے چیئرمین ذکا اشرف نے پریس کانفرنس کرتےہوئے کہا کہ کچھ شوگر ملز مالکان کو کل گرفتار کیا گیا، اس طرح کے اقدامات کرنے سے پہلے بات چیت کریں۔

چیئرمین شوگر ملز  ایسوسی ایشن نےکہا کہ شوگر ملز مالکان کو  بلا جواز  پکڑا جا رہا ہے، پندرہ ، پندرہ ارب روپے کی سرمایہ کاری کی ہوئی ہے،ملکی صنعت میں جو اربوں روپے کی سرمایہ کاری کرتا ہے اس کے ساتھ ایسا نہ کریں۔

انہوں نےکہا کہ انصاف سب کےلیے برابر ہوتا ہے، آپ کو سب کے لیے برابر سوچنا چاہیے، کچا گنا توڑیں گے تو  پیدوار کم ہوگی، پچھلے سال اسلام آباد ہائی کورٹ کے احترام میں 72 روپے فی کلوچینی فروخت کی گئی تھی۔

خیال رہےکہ پنجاب حکومت نے مہنگی چینی فروخت کرنے پر شوگر ملز مالکان کو گرفتار کرلیا ہے۔

چیف سیکرٹری پنجاب کے مطابق چنار شوگر ملز فیصل آباد، شکر گنج شوگر ملز جھنگ اورپسرور شوگر ملز گوجرانوالہ کے مالکان اور انتظامیہ کے خلاف مقدمات درج کرلیے۔

چیف سیکرٹری نے بتایا کہ چنار شوگر ملز کے مالک جاوید کیانی، شکر گنج شوگر ملز کے مالک پرویز احمد کو گرفتار کرلیا جبکہ شکر گنج شوگر ملز کے جنرل منیجر کین منظور حسین ملک، جنرل منیجر ایڈمن حسین ملک کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ پسرور شوگر ملز کے مالکان کی گرفتاری کیلئے پولیس چھاپے مار رہی ہے، قانون شکنی کرنے والوں سے سختی سے نمٹا جائے گا اور چینی کی مقررہ سے زائد قیمت پر فروخت کی صورت میں سخت کارروائی کی جائے گی۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM