کان کن نے 35 ہزار سال سے برف میں محفوظ وولی میمتھ دریافت کرلیا

اس جاندار کو کینیڈا کی سونے کی ایک کان میں دریافت کیا گیا / فوٹو بشکریہ Calgary یونیورسٹی
اس جاندار کو کینیڈا کی سونے کی ایک کان میں دریافت کیا گیا / فوٹو بشکریہ Calgary یونیورسٹی

کینیڈا کی کلونٹڈیک نامی سونے کی کان سے ایک نوجوان کان کن نے اپنی زندگی کی سب سے بڑی دریافت کی۔

یہ دریافت برفانی عہد کے ایک جانور کی اب تک درست حالت میں موجود لاش تھی۔

وولی میمتھ (ہاتھیوں کی قدیم ترین نسل) کے بچے کی یہ برف میں محفوظ لاش ایک اندازے کے مطابق 35 ہزار سال سے بھی زیادہ پرانی ہے۔

قدیم حیاتیات کے ماہر گرانٹ زازولا نے بتایا کہ اس بچے کی سونڈ، دم اور چھوٹے چھوٹے کان ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ شمالی امریکا میں زمانہ قدیم کی زندگی کے حوالے سے سب سے اہم ترین دریافت ہے کیونکہ اس وولی میمتھ کی کھال اور بال اب تک موجود ہیں۔

ماہرین کے خیال میں وولی میمتھ کے اس بچے کی عمر ایک ماہ کے قریب ہوگی جس کی لمبائی 140 سینٹی میٹر ہے جو 2007 میں سائبیریا میں دریافت ہونےو الی وولی میمتھ سے کچھ زیادہ ہے۔

مقامی افراد نے اس جانور کو نن چو گا کا نام دیا ہے۔

اس دریافت کے بعد کان کن کمپنی نے ملازمین کو چھٹی دی تھی جس کے باعث ماہرین کو اس جگہ پہنچنے میں مشکلات کا سامنا ہوا جہاں سے اس وولی میمتھ کو دریافت کیا گیا تھا۔

انہوں نے وہاں پہنچ کر اسے باہر نکالا جبکہ جانچ پڑتال میں اس وولی میمتھ کے پیٹ سے گھاس کی کچھ مقدار کو بھی دریافت کیا گیا۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ ممکنہ طور پر موت کے بعد وولی میمتھ کا یہ بچہ برف میں منجمد ہوگیا تھا اور یہ سب بہت جلدی ہوا ہوگا۔

ابھی ماہرین نے یہ فیصلہ کرنا ہے کہ اس پر کس طرح  تحقیقی کام کرنا ہے اور بعد میں اسے محفوظ رکھنے کے لیے کیا کرنا ہوگا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM