کھیل
23 نومبر ، 2022

ٹیم میں کچھ ڈرپوک میرے کوچنگ اسٹائل کی شکایتیں لگاتے تھے، سابق آسٹریلوی کوچ پھٹ پڑے

ہر کوئی میرے چہرے کے سامنے بہت اچھا تھا لیکن ٹیم میں کچھ ایسے ڈرپوک بھی تھے جو میڈیا میں میرے کوچنگ اسٹائل کی شکایتیں لگاتے تھے: جسٹن لینگر۔ فوٹو فائل
 ہر کوئی میرے چہرے کے سامنے بہت اچھا تھا لیکن ٹیم میں کچھ ایسے ڈرپوک بھی تھے جو میڈیا میں میرے کوچنگ اسٹائل کی شکایتیں لگاتے تھے: جسٹن لینگر۔ فوٹو فائل

آسٹریلیا کے سابق کوچ اور ٹیسٹ کرکٹر جسٹن لینگر خود کو ٹیم سے الگ کیے جانے پر پھٹ پڑے۔

سابق آسٹریلوی کوچ جسٹن لینگر کا کہنا ہے کہ ہر کوئی میرے چہرے کے سامنے بہت اچھا تھا لیکن ٹیم میں کچھ ایسے ڈرپوک بھی تھے جو میڈیا میں میرے کوچنگ اسٹائل کی شکایتیں لگاتے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ میں نے سابق کپتان ٹم پین ٹیسٹ کپتان پیٹ کمنز اور وائٹ بال کپتان ایرون فنچ سے بات کرنے کے بعد کوچنگ اسٹائل بدلا۔

ان کا کہنا تھا بہت سے صحافی ذرائع کا لفظ استعمال کرتے ہیں انہیں ڈرپوک کا لفظ استعمال کرنا چاہیے، ایسے ڈرپوک لوگ ایجنڈے کے تحت چیزیں لیک کرتے ہیں اور سامنے نہیں آتے لیکن مجھے اس سے بہت نفرت ہے۔

جسٹن لینگر کا کہنا تھا ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ اور ایشیز میں کامیابی پر جب مجھے طویل مدت کے لیے کوچ نہ بنایا گیا تو میں نے بہت محسوس کیا، ہم نمبر ون تھے میں کوچنگ سے مزید لطف اندوز بھی نہیں ہو رہا تھا لیکن مجھے برطرف کرنا اچھا نہیں لگا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM