دنیا
30 نومبر ، 2022

بھارت: گرل فرینڈ کے 35 ٹکڑے کرنے کے بعد آفتاب نے آرڈر پر منگوایا کھانا بھی کھایا

تفتیش کے دوران معلوم ہوا کہ ملزم نے پہلے دو لوگوں کے کھانے کا آرڈر دیا لیکن قتل کے بعد ملزم نے ایک آرڈر کینسل کروادیا/ فائل فوٹو
تفتیش کے دوران معلوم ہوا کہ ملزم نے پہلے دو لوگوں کے کھانے کا آرڈر دیا لیکن قتل کے بعد ملزم نے ایک آرڈر کینسل کروادیا/ فائل فوٹو 

بھارت میں اپنی گرل فرینڈ کو قتل کر کے لاش کے 35 ٹکڑے فریج میں رکھنے والے ملزم آفتاب پونے والا کے کیس میں مزید پیشرفت ہوئی ہے اور پتہ چلا ہے کہ ملزم نے قتل کے ایک گھنٹے بعد فوڈ ایپ سے کھانا بھی آرڈر کیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق پولیس کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ تفتیش کے دوران قاتل کا بتانا ہے کہ اس نے اپنی دوست کو 18 مئی کی شب نوبجے قتل کیا اور اس کے فون ریکارڈ سے معلوم ہوا ہے کہ قتل کے ٹھیک ایک گھنٹے بعد یعنی 10 بجے ملزم نے فوڈ ایپ سے کھانے کا آرڈر دیا۔

ذرائع کے مطابق تفتیشی حکام یہ جان کر حیرانی میں مبتلا ہوگئے کہ ایک آدمی قتل کرنے کے بعدکھانا کھانے کا کیسے سوچ سکتا ہے جبکہ عام طور پر اس طرح کے کیسز میں ملزم اپنی پیاس بجھانے کا بھی نہیں سوچ سکتا۔

  ذرائع کے مطابق تفتیشی حکام نے ملزم آفتاب کے موبائل کو اسکین کیا جس سے مزید معلومات حاصل کی گئیں اور پتا چلا کہ ملزم اور مقتولہ جب فلیٹ میں جا رہے تھے تب ملزم نے پہلے دو لوگوں کے کھانے کا آرڈر دیا لیکن قتل کے بعد ملزم نے ایک آرڈر کینسل کروا دیا۔

ذرائع کے مطابق دوران تفتیش ملزم نے بتایا کہ شردھا بار  بار تعلق ختم کرنے کا کہتی تھی لیکن آفتاب اس پر رضامند نہیں تھا اور وہ اس تعلق کو جاری رکھنا چاہتا تھا، وہ شردھا کو کسی اور لڑکے کے ساتھ نہیں دیکھنا چاہتا تھا۔

خیال رہے کہ آفتاب پونا والا پر مئی میں اپنی دوست شردھا کو تلخ کلامی کے بعد قتل کرنے کا الزام ہے، جرم چھپانے کے لیے آفتاب نے لاش کے 35 ٹکڑے کر کے فریج میں رکھے اور ایک ایک کر کے 18 دنوں میں شہر کے مختلف مقامات پر پھینکے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM