فواد چوہدری کی بازیابی کا کیس: عدالت نے آئی جی پنجاب اور اسلام آباد کو فوری طلب کر لیا

فواد چوہدری کی بازیابی سے متعلق کیس میں لاہور ہائیکورٹ نے آئی جی پنجاب اور آئی جی اسلام آباد کو طلب کر لیا۔

فواد چوہدری کی بازیابی سے متعلق کیس کی سماعت لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس طارق سلیم شیخ کر رہے ہیں۔

دوران سماعت جسٹس طارق سلیم شیخ نے استفسار کیا کہ کدھر ہیں فواد چوہدری؟ جس پر سرکاری وکیل نے بتایا کہ سب سے بات کی ہے لیکن وہ پنجاب پولیس کے پاس نہیں ہے۔


جسٹس طارق سلیم شیخ نے کہا کہ آئی جی پنجاب کو بلائیں، جس پر سرکاری وکیل نے جواب دیا کہ آئی جی پنجاب ابھی یہاں نہیں ہیں۔

عدالت نے آئی جی پنجاب اور آئی جی اسلام آباد کو 6 بجے طلب کرتے ہوئے سرکاری وکیل سے کہا پہلے فواد چوہدری کو پیش کریں تب آپ کو سنوں گا۔

یاد رہے لاہور ہائیکورٹ نے فواد چوہدری کو عدالت میں ڈیڑھ بجے پیش کرنے کا حکم دیا تھا تاہم اسلام آباد پولیس فواد چوہدری کو طبی معائنے کے بعد اسپتال سے لیکر وفاقی دارالحکومت کے لیے روانہ ہو گئی ہے۔

قبل ازیں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کو راہداری ریمانڈ کے لیے کینٹ کچہری میں پیش کیا گیا ، عدالت نے اسلام آباد پولیس کی راہداری ریمانڈ کی درخواست منظور کرتے ہوئے پہلے ان کا طبی معائنہ کرنے کی ہدایت کی تھی۔

مزید خبریں :