پاکستان
Time 29 فروری ، 2024

جنرل باجوہ اور فیض بیٹھ کر ہم سے قانون سازی کرواتے تھے: خواجہ آصف

سیاسی استحکام کیلئے باقی کھلاڑی بھی موجود ہیں صرف سیاست دان نہیں ہیں: رہنما (ن) لیگ/ فائل فوٹو
سیاسی استحکام کیلئے باقی کھلاڑی بھی موجود ہیں صرف سیاست دان نہیں ہیں: رہنما (ن) لیگ/ فائل فوٹو

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے نومنتخب رکن اور سابق وفاقی وزیر خواجہ آصف نے انکشاف کیا ہے کہ جنرل باجوہ اورجنرل فیض باہم مل کر ہم سے قانون سازی کرواتے رہے اور اس کیلئے ہمیں آئی ایس آئی کے میس میں جانا پڑتا۔

بدھ کو (ن) لیگ کی پارلیمانی پارٹی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ سیاسی استحکام کیلئے باقی کھلاڑی بھی موجود ہیں صرف سیاست دان نہیں ہیں، اب سب کو باہم مل کر بیٹھنا ہوگا تاکہ استحکام آسکے۔

انہوں نے کہا کہ جنرل فیض اورجنرل باجوہ ایف اے ٹی ایف اور مجلس عاملہ کے حوالے سے بھی قانون سازی کراتے رہے،اس ماحول میں اورکیا ہوتا، پھر اس کے علاوہ جس بگاڑ نے جنم لیا اسی کو اب برداشت کررہے ہیں۔

خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ آئین کی دوبارہ خلاف ورزی صدرعارف علوی نے کی ہے جس پر آرٹیکل 6 کے تحت غداری کا کیس چل جانا چاہیے، 9 مئی کو بھی ریاست کو چیلنج کردیا گیا تھا جس کے مرتکب لوگوں کو احتساب کے عمل میں لانا چاہیے ورنہ یہ سلسلہ رکے گا نہیں۔

مزید خبریں :