Can't connect right now! retry

خلا میں چہل قدمی کرنے والا پہلا انسان چل بسا

الیگزے لیونوف1965 میں خلا میں جانے والے سوویت یونین کے خلائی مشن ووسخود 2 کا حصہ تھے —فوٹو:ناسا

خلا میں چہل قدمی کرنے والے پہلے انسان روسی خلا باز الیگزے لیونوف 85 سال کی عمر میں چل بسے۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی خلا باز الیگزے لیونوف کا انتقال طویل علالت کے بعد ماسکو کے ایک اسپتال میں ہوا۔

الیگزے لیونوف کا نام تاریخ میں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا کیونکہ وہ پہلے انسان تھے جس نے خلا میں قدم رکھا۔

الیگزے لیونوف 1965 میں خلا میں جانے والے سوویت یونین کے خلائی مشن ووسخود 2 کا حصہ تھے اور 18 مارچ 1965 کو وہ خلائی سوٹ (خلا نوردوں کے خصوصی لباس) میں خلائی گاڑی سے باہر آئے اور 12 منٹ تک خلا میں رہے۔

واضح رہے کہ یہ چہل قدمی ہوا میں معلق یا تیرتے رہنے جیسی تھی۔

ان کے خلا میں 12 منت تک رہنے کی ایک وجہ یہ بھی تھی کہ وہ خلائی گاڑی کے کیبل میں پھنس گئے تھے اس دوران بڑی مشکل سے واپس خلائی گاڑی میں آنے میں کامیاب ہوئے۔

الیگزے لیونوف کے تین ماہ بعد امریکی خلا باز ایڈ وائٹ دوسرے انسان تھے جوخلا میں قدم رکھنے میں کامیاب ہوئے۔

واضح رہے کہ امریکی خلاباز نیل آرم اسٹرانگ چاند پر قدم رکھنے والے پہلے انسان تھے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM