Can't connect right now! retry

دنیا
12 دسمبر ، 2019

بھارتی متنازع بل کی مذمت، سینیئر پولیس افسر احتجاجاً مستعفی

بھارتی پولیس سروس کے سینیئر افسر عبدالرحمٰن نے متنازع بل کی مذمت کرتے ہوئے استعفی دے دیا— فوٹو انڈیا ٹوڈے

بھارت میں شہریت سے متعلق متنازع ترمیمی بل کی شدید مذمت کرتے ہوئے مہاراشٹرا میں تعینات بھارتی پولیس سروس کے سینیئر افسر نے احتجاجاً  استعفیٰ دے دیا۔

گزشتہ ہفتے بھارتی پارلیمنٹ کے ایوانِ زیریں میں وزیرِ داخلہ امیت شاہ کی جانب سے ایک بل پیش کیا گیا تھا جس کے تحت پاکستان، بنگلا دیش اور افغانستان سے بھارت جانے والے غیر مسلموں کو شہریت دی جائے گی لیکن مسلمانوں کو نہیں۔

تارکینِ وطن کی شہریت سے متعلق اس متنازع ترمیمی بل کو ایوان میں 12 گھنٹے تک بحث کے بعد کثرتِ رائے سے منظور کر لیا گیا تھا۔

ایوان زیریں کے بعد ایوان بالا میں بھی اس متنازع بل کو کثرت رائے سے منظور کیا جا چکا ہے۔

متنازع شہریت بل کے خلاف بھارت کی مختلف ریاستوں میں بڑے پیمانے پر احتجاج کیے جا رہے ہیں جب کہ امریکا سمیت دنیا بھر سے بھی اس کے خلاف آوازیں اٹھائی جا رہی ہیں۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق مذکورہ بل کی شدید مذمت کرتے ہوئے بھارتی ریاست مہاراشٹرا میں تعینات پولیس سروس کے سینیئر افسر  عبدالرحمٰن احتجاجاً مستعفی ہو گئے ہیں۔

مستعفی ہونے سے متعلق بھارتی پولیس افسر عبدالرحمٰن نے کہا کہ بل کی مذمت کرتا ہوں، اس لیے سول نافرمانی کرتے ہوئے عہدہ چھوڑ رہا ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس بل کا  مقصد مسلمانوں میں خوف پھیلانا اور قوم کو تقسیم کرنا ہے، شہریت ترمیمی بل آئین کی بنیادی خصوصیات کے منافی ہے۔

بھارتی افسر  عبدالرحمٰن نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے مزید کہا کہ وزیر داخلہ نے پارلیمنٹ میں غلط حقائق اور گمراہ کُن معلومات پیش کیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM