Can't connect right now! retry

کورونا کے مریضوں کے علاج کی خاطر سکھ ڈاکٹروں نے اپنی داڑھی کی قربانی دیدی

عالمگیر وبا کورونا کے خلاف جنگ لڑنے کے لیے طبی عملہ فرنٹ لائن پر ہے، ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف دن رات ماسک اور حفاظتی لباس پہن کر اپنی جانوں کی پرواہ کیے بغیر خدمات انجام دے رہے ہیں۔

کورونا وائرس کے خلاف عالمی جنگ میں پاکستان اور امریکا سمیت دیگر ممالک میں ڈاکٹر اور طبی عملے کے کئی افراد اپنی جانوں سے ہاتھ بھی دھو چکے ہیں۔ 

لیکن اس کے باوجود حال ہی میں کورونا وائرس کے مریضوں کے علاج کی خاطر کینیڈا میں موجود دو سکھ ڈاکٹر بھائیوں  نے اپنی داڑھی کی قربانی دے دی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق کورونا وائرس کے مریضوں کے علاج کرنے والے دونوں سکھ ڈاکٹر بھائیوں نے یہ فیصلہ اس لیے کیا کیونکہ انہیں لمبی داڑھی کے سبب ماسک پہننے میں مشکلات کا سامنا تھا۔

ڈارھی کی قربانی دینے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک ایسا فیصلہ ہے جس نے ہمیں بہت دکھی کر دیا ہے، یہ وہ چیز  تھی جو ہماری شناخت کا حصہ رہی، اب خود کو آئینے میں دیکھتے ہیں تو صدمہ ہوتا ہے۔

 ڈاکٹر بھائیوں کا مزید کہنا تھا کہ یہ ہمارے لیے ایک انتہائی مشکل فیصلہ تھا لیکن اس وقت ہمیں یہ کرنے کی ضرورت تھی۔ 

خیال رہے کہ کینیڈا میں موجود ڈاکٹر سنجیت سنگھ سلوجا فزیشن ہیں اور ان کے بھائی ڈاکٹر رنجیت سنگھ نیورو سرجن ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM