Can't connect right now! retry

صحت و سائنس
16 ستمبر ، 2020

ناک کے اسپرے کے ذریعے دی جانے والی کورونا ویکسین کے انسانی ٹرائل کی منظوری

ناک میں اسپرے کے ذریعے ویکسین کی آزمائش نومبر میں شروع ہونے کا امکان ہے: چینی میڈیا— فوٹو:فائل

چین نے ناک کے اسپرے کے ذریعے دی جانے والی کورونا ویکسین کے انسانی ٹرائل  کی منظوری دے دی۔

چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والا کورونا وائرس اب تک لاکھوں زندگیاں نگل چکا ہے اور کروڑوں افراد اس وائرس سے متاثر ہیں۔

مہلک وائرس کی ہلاکت خیزی کا توڑ نکالنے کے لیے دنیا بھر کے سائنسدان سر جوڑ کر ویکسین کی تیاری میں مصروف ہیں۔

وہیں چین کے سائنسدان انجیکشن کے ذریعے نہیں بلکہ اسپرے کے ذریعے دی جانے والی کورونا ویکسین کی تیاری میں مصروف ہیں۔

چین نے ناک کے اسپرے کے ذریعے دی جانے والی کورونا ویکسین کے انسانی ٹرائل کے پہلے مرحلے کی منظوری دے دی ہے اور یہ اپنی نوعیت کی پہلی ویکسین ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسپرے ویکسین چین کی زیامین یونیورسٹی اور ہانگ کانگ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے بنائی ہے جس کے ٹرائلز کے لیے چین سے 10 افراد کو منتخب کیا گیا ہے۔

مقامی میڈیا رپورٹس کے مطابق ناک میں اسپرے کے ذریعے ویکسین کی آزمائش نومبر میں شروع ہونے کا امکان ہے جب کہ یہ اپنی نوعیت کی پہلی ویکسین ہے جس کی منظوری نیشنل میڈیکل پروڈکٹ ایڈمنسٹریشن نے دی ہے۔

ماہرین کے مطابق ناک میں اسپرے کے ذریعے سے ویکسین کورونا اور نزلے کے لیے مفید ثابت ہوسکتی ہے جب کہ اس کے 3 کلینیکل ٹرائلز میں ایک سال کا عرصہ لگ سکتا ہے۔

خیال رہے کہ کورونا کے باعث دنیا بھر میں 9 لاکھ سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں جب کہ متاثرہ مریضوں کی تعداد 2 کروڑ 98 لاکھ سے تجاوز کرچکی ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM