Can't connect right now! retry

پاکستان
24 ستمبر ، 2020

اپوزیشن کا دواؤں کی قیمتوں میں اضافہ واپس لینے کا مطالبہ

وفاقی حکومت کی جانب سے دواؤں کی قیمتوں میں اضافے پر اپوزیشن جماعتوں نے شدید تنقید کرتے ہوئے اضافہ واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف نے اپنے ردعمل میں کہا کہ دواؤں کی قیمتوں میں 262 فیصد تک اضافہ نالائقی، بدنیتی اور بدعنوانی کی ایک بڑی بھاری قیمت ہے جو بدقسمتی سے عوام روزانہ کی بنیاد پر چکا رہے ہیں۔

پیپلزپارٹی نے بھی ادویات کی قیمتوں میں اضافہ فوری واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

پیپلز پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مولابخش چانڈیو نے کہا ہےکہ عمران خان اپنے مالی سہولت کاروں کی جیبیں بھرنے، عوام کو لوٹنےکےایجنڈے پرعمل پیراہیں۔

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا کہ حکومت نے دوائیوں کی قیمتوں میں بھی اضافہ کردیا، عمران خان کی حکومت ناکامی سے دوچار ہے۔

خیال رہے کہ وفاقی حکومت نے 94 دواؤں کی قیمتوں میں 9 تا 262 فیصد تک اضافے کی منظوری دے دی ہے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق بخار، سردرد، امراض قلب، ملیریا، شوگر، گلے میں خراش اور فلوکی دوائیں مہنگی کی گئی ہیں۔

اس کے علاوہ اینٹی بائیوٹکس، پیٹ درد، آنکھ،کان، دانت، منہ، اور بلڈ انفیکشن کی دواؤں کی قیمت میں بھی اضافہ کیا گیا ہے۔

نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہےکہ مارکیٹ میں دواؤں کی دستیابی کم ہونے سے وفاقی حکومت کو مجبوراً اضافہ کرنا پڑا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM