Can't connect right now! retry

پاکستان
29 نومبر ، 2020

سراج الحق کا کورونا کے پیش نظر 2 ہفتوں کیلئے تمام جلسے مؤخر کرنے کا اعلان

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کاکہنا ہےکہ حکومت نے کورونا کو سیاسی وائرس بنادیا، گزشتہ روز سکھر میں وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے جلسہ کیا، اگر غلط کیا تھا تو انہیں گرفتار کیوں نہیں کیا؟

لوئر دیر میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے ملتان میں پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کےکارکنوں کی گرفتاریوں کی مذمت کرتے ہوئےکہاکہ جلسہ کرنا ہر سیاسی جماعت کا حق ہے، حکومت نے کورونا کو سیاسی وائرس بنادیا ہے، وزیراعظم نے تو کنٹینرز فراہم کرنےکاوعدہ کیا تھا۔

سراج الحق کاکہنا تھاکہ حکومت کورونا کے دوران جلسہ کرنے پر پابندی کاکہتی ہے تو وہ پوچھناچاہتے ہیں کہ گزشتہ روز وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسدعمر نے سکھر میں جلسہ کیوں کیا؟ انہیں جیل میں ڈالیں، علی امین گنڈا پور نے بھی گلگت بلتستان کو فتح کرنے کے لیے 12جلسے کیے۔

ان کاکہنا تھاکہ حکومت نےکورونا کے حوالے سے اب تک کوئی سنجیدہ پالیسی عوام کو نہیں دی، کورونا کے نام پر باہر سے آنے والا 87 فیصد پیسہ حکومت نے اپنے اخراجات پر خرچ کیا، ناکام حکومت نے تعلیمی اداروں کو بند کردیا ہے، حکومت بچوں کو ماسک اور سینیٹائزر نہیں دے سکتی۔

امیر جماعت اسلامی کاکہنا تھاکہ وہ پی ڈی ایم اور تحریک انصاف کےدرمیان کوئی فرق محسوس نہیں کرتے، دونوں کی تمام پالیسیاں ایک ہیں اور دونوں کو اقتدار سے مطلب ہے۔

اس موقع پر سراج الحق نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیش نظر آئندہ 2 ہفتوں کے لیے تمام سیاسی جلسوں کو مؤخر کرنے کا بھی اعلان کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ تحریک کے اگلے مرحلے میں جماعت اسلامی پنجاب میں جلسے کرے گی جس کا آغاز گوجرانوالا سے ہوگا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM