انسانی پھیپھڑے پہلی بار ڈرون کے ذریعے اسپتال منتقل

کینیڈا میں پیوندکاری کے لیے انسانی پھیپھڑوں کو پہلی بار ڈرون کے ذریعے ایک سے دوسرے اسپتال پہنچایا گیا۔

انسانی پھیپھڑوں نے ستمبر کے آخری دنوں میں ٹورنٹو کے دو اسپتالوں کے درمیان یہ سفر کیا جس میں بذریعہ ڈرون 6 منٹ کے دورانیے میں 1.5 کلو میٹر کا فاصلہ طے کیا گیا۔

ان پھیپھڑوں کی پیوندکاری 63 سال کے شخص ایلن ہوڈک میں کی گئی جن کے اپنے پھیپھڑے ناکارہ ہوچکے تھے۔

پیوندکاری کے لیے انسانی اعضا کی کمی کی وجہ سے کئی کمپنیاں ڈرون ٹیکنالوجی پر کام کر رہی ہیں__فوٹو: غیر ملکی میڈیا
 پیوندکاری کے لیے انسانی اعضا کی کمی کی وجہ سے کئی کمپنیاں ڈرون ٹیکنالوجی پر کام کر رہی ہیں__فوٹو: غیر ملکی میڈیا

انسانی اعضا کو روایتی طریقوں سے ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کرنے میں کئی مرتبہ تاخیر ہو جاتی ہے جس کے بعد یہ پیوندکاری کے قابل نہیں رہتے۔

تاہم پیوندکاری کے لیے انسانی اعضا کی کمی کی وجہ سے کئی کمپنیاں ڈرون ٹیکنالوجی پر کام کر رہی ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM