پاکستان
16 مئی ، 2022

وزیراعظم کا گندم خریداری کے اہداف پورے نہ کرنے پر صوبوں پر اظہار برہمی

ملک میں وافر گندم موجود ہے، صوبے ذخیرہ اندوزی کے خلاف اقدامات کریں اور یکم جون تک گندم خریداری کے اہداف پورے کریں: شہباز شریف۔ فوٹو: فائل
ملک میں وافر گندم موجود ہے، صوبے ذخیرہ اندوزی کے خلاف اقدامات کریں اور یکم جون تک گندم خریداری کے اہداف پورے کریں: شہباز شریف۔ فوٹو: فائل

اسلام آباد: وزیراعظم شہباز شریف نے گندم خریداری کے اہداف پورے نہ کرنے پر صوبوں پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف کی زیر صدارت ملک میں گندم اور آٹے کی قلت کی صورتحال کا جائزہ لینے سے متعلق اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزرا طارق بشیر چیمہ اور وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کے علاوہ متعلقہ ڈویژنز اور محکموں کے افسران شریک ہوئے جبکہ صوبائی چیف سیکرٹریز ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف کا کہنا تھا کہ قوم کا ایک ایک پیسہ بچانا بطور حکومت ہمارا فرض ہے، ملک میں وافر گندم موجود ہے، صوبے ذخیرہ اندوزی کے خلاف اقدامات کریں۔

وزیراعظم نے گندم خریداری کے اہداف پورے نہ کرنے پر صوبوں پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو کسی صورت مشکل میں نہیں ڈالا جاسکتا۔

ان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت ہر صورت کم قیمت پر آٹا فراہم کرے گی اور اس حوالے سے ہر ممکن مدد فراہم کر رہی ہے، صوبے یکم جون تک گندم خریداری کے اہداف پورے کریں۔

وزیراعظم شہباز شریف کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت خیبرپختونخوا حکومت کی بھی ہر ممکن مدد کرے گی، غریب عوام کی خدمت اولین فریضہ ہے۔

درآمد کی جانے والی گندم کی صوبوں میں شفاف تقسیم کے لیے فوری کمیٹی قائم کرنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ سستی اور بہترین معیار کی گندم درآمد کو یقینی بنایا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ تمام یوٹیلیٹی اسٹورز پر آٹے کی 10 کلو قیمت 490 روپے برقرار رکھی جائے اور اوپن مارکیٹ میں بھی باقی صوبے اسی قیمت کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات کریں۔ 

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM