کاروبار
20 جون ، 2022

پیٹرول مہنگا ہونے پر یو اے ای میں الیکٹرک گاڑیوں کی طلب میں 200 فیصد اضافہ

یو اے ای میں پیٹرول کی قیمت تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکی ہے / فائل فوٹو
یو اے ای میں پیٹرول کی قیمت تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکی ہے / فائل فوٹو

جون میں پیٹرول کی قیمتیں تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچنے کے بعد متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں الیکٹرک گاڑیوں کی طلب میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔

خلیج ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق یو اے ای میں الیکٹرک گاڑیوں کی طلب میں 200 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

نیو آٹو نامی کمپنی کے سی ای او بلال نصر نے بتایا کہ الیکٹرک گاڑیوں سے بہت زیادہ بچت ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ روایتی ایندھن پر ہر ماہ 2 ہزار درہم خرچ کرنے کی بجائے اسی رقم کو ہم نئی الیکٹرک گاڑی کی قسطیں ادا کرنے کے لیے استعمال کرسکتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ روایتی ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کے باعث الیکٹرک گاڑیوں کی طلب بڑھی ہے۔

یہ کمپنی دنیا بھر سے الیکٹرک گاڑیاں درآمد کرتی ہے اور طلب بہت زیادہ بڑھنے کی وجہ سے یو اے ای میں ان گاڑیوں کی قلت بھی ہوگئی ہے۔

ایک سروے میں دریافت کیا گیا تھا کہ یو اے ای کے 52 فیصد شہری ہائبرڈ یا الیکٹرک گاڑی خریدنے کی منصوبہ بندی کررہے ہیں۔

یوکرین جنگ کے باعث یو اے ای میں جنوری 2022 سے جون تک ایندھن کی قیمتوں میں 56 فیصد اضافہ ہوچکا ہے اور فی لیٹر پیٹرول کی قیمت 4 درہم کے قریب ہے۔

مقامی ماہرین کے مطابق وقت کے ساتھ الیکٹرک گاڑیوں میں دلچسپی بڑھنا قدرتی ہے، مگر پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے نے لوگوں کو نئی ٹیکنالوجی کی طرف زیادہ متوجہ کیا ہے۔

یو اے ای میں متعدد شاپنگ مالز اور عمارات میں الیکٹرک گاڑیوں کے لیے مفت چارجنگ اور پارکنگ بھی فراہم کی جارہی ہے۔

اسی طرح یو اے ای میں ماحول دوست الیکٹرک گاڑیوں کو ٹیکس فری بھی قرار دیا گیا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM