پاکستان
13 اگست ، 2022

بلوچستان میں مون سون کے چوتھے اسپیل سے مشکلات میں 4 گنا اضافہ

فوٹو: فائل
فوٹو: فائل

بلوچستان میں مون سون کے چوتھے اسپیل نے مشکلات میں 4 گنا اضافہ کردیا ہے۔

قلعہ عبداللہ میں تین ڈیم ٹوٹ گئے جس سے سیکڑوں مکانات تباہ ہوگئے،  ریلوے پٹری، کئی رابطہ پل اور کئی سڑکیں سیلابی ریلے میں بہہ گئیں۔

سیداں میں ٹریکٹر ٹرالی کے بیس سے زائد سوار بہہ گئے ، جن میں سے 6 کو بچا لیا گیا، سیلابی ریلے مختلف علاقوں میں داخل ہوگئے، حبیب زئی میں بڑی تعداد میں لوگ ریلے میں پھنس گئے۔

ادھر ڈیرہ  مراد جمالی میں رابطہ سڑک بحال نہ ہونے سے درجنوں خاندان سیلابی پانی میں محصور ہو گئے ، پی ڈی ایم اے نے کیچ اور گوادر میں بھی الرٹ جاری کردیا ۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق بلوچستان میں جاری بارشوں کے باعث مزید 6 اموات کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد صوبے میں جاں بحق افراد کی تعداد 188ہوگئی۔

پی ڈی ایم اے رپورٹ کے مطابق صوبے میں اب تک 19ہزار  762 مکانات کو نقصان پہنچ چکا ہے، 5103 مکانات مکمل تباہ اور 14ہزار 660 جزوی طور پر متاثر ہوئے ہیں، صوبے میں بارشوں اور سیلاب سے 26 ہزار 929 مویشی ہلاک ہوئے ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM