پلمبر کو اتوار کو بلایا وہ جمعرات کو آگیا:زیادتی کے بعد قتل ہونیوالی بچی کی والدہ کا انکشاف

پلمبرکو کام کیلئے اتوار کو بلایاتھا وہ جمعرات کو آگیا، کام کے بہانے گھر میں داخل ہوا، چھوٹی بیٹی گھرپر اکیلی تھی: والدہ زینب— فوٹو:فائل
پلمبرکو کام کیلئے اتوار کو بلایاتھا وہ جمعرات کو آگیا، کام کے بہانے گھر میں داخل ہوا، چھوٹی بیٹی گھرپر اکیلی تھی: والدہ زینب— فوٹو:فائل

کراچی کے علاقے مبینہ ٹاؤن میں 14 سالہ زینب کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والا ملزم گرفتار کرلیا گیا۔

اس المناک قتل کا تعلق موسمیات کے ایک غریب گھر سے ہے جہاں مہنگائی کے باعث باپ، ماں اور بڑی بہن کام کرتے ہیں تب کہیں جاکر دو وقت کی روٹی کا آسرا ہوپاتا ہے۔

اس دوران 14 سال کی زینب گھر میں اکیلی ہوتی تھی۔

گزشتہ روز زینب کے والد نے فلیٹ میں کسی کام کیلئے اپنے واقف عرفان نامی پلمبر کو بلوایا تھا، عرفان گھر آیا تو زینب کو اکیلا پاکر زیادتی کی اور پھر قتل کردیا۔

ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں زینب کی موت دم گھٹنے سے ہوئی، تفتیش کاروں کو شبہ ہے کہ ملزم نے اُسے گلا دبا کر یا منہ پر تکیہ رکھ کر قتل کیا ہے۔

پولیس نے ملزم عرفان کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کر لیا ہے۔

دوسری جانب زینب کی والدہ غم سے نڈھال اور انصاف کی منتظر ہے  اور ان کا کہنا ہے کہ پلمبرکو کام کیلئے اتوار کو بلایاتھا وہ جمعرات کو آگیا، کام کے بہانے گھر میں داخل ہوا، چھوٹی بیٹی گھرپر اکیلی تھی۔

ان کا کہنا تھاکہ پلمبر کو معلوم تھا کہ ماں باپ گھر پر نہيں ہوں گے، خدا جانے اس نے کیا کہا کہ بچی نے دروازہ کھول دیا اور ملزم نے بچی کو زیادتی کا نشانہ بناکر قتل کردیا

انہوں نے بتایا کہ زینب آٹھویں جماعت میں پڑھتی تھی اور ڈاکٹر بننا چاہتی تھی۔

مزید خبریں :